ملتان ڈویژن ، ریلوے ٹریک کے قریب سینکڑوں سکول ، فیکٹریاں ، ملازے ، دکانیں مسمار کرنیکی تیاریاں

ملتان ڈویژن ، ریلوے ٹریک کے قریب سینکڑوں سکول ، فیکٹریاں ، ملازے ، دکانیں ...

  

ملتان(خصوصی رپورٹر)ریلوے ملتان ڈویژن میں ٹریک کے قریب سینکڑوں سکول اور کاروباری یونٹ موجود ہیں جن کے خلاف کارروائی کے لئے لسٹوں کی تیاری شروع کر دی گئی ہے جبکہ تعلیمی اداروں نے قانونی مشاورت شروع کر دی ہے۔ واضح رہے کہ وزیر ریلوے شیخ رشید احمد نے 30اکتوبر کی ڈیڈ لائن کے ساتھ اعلان کر دیا ہے کہ ریلوے ٹریک کے قریب موجود تمام سکولوں اور کاروباری یونٹ کو بند کر دیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق ریلوے ملتان (بقیہ نمبر26صفحہ12پر )

ڈویژن دیگر ڈویژنوں سے بڑا ڈویژن ہے جس کے ریلوے ٹریک کے ساتھ ایک ہزار سے زائد سرکاری اور پرائیویٹ سکولز، کالجز موجود ہیں جبکہ فیکٹریاں، پلازے، مارکیٹس، بازار بھی ہیں جنہیں بڑے پیمانے پر کئے جانے والے آپریشن کے بعد بند کر دیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ تعلیمی ادارے بند کئے جانے کے بعد طلباء و طالبات کی تعلیم متاثر ہو گی جن کا تعلیمی سال بھی ضائع ہو سکتا ہے۔ وزیر ریلوے کی جانب سے کئے گئے اعلان کے بعد تعلیمی اداروں کے سربراہان میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ ان میں سے کچھ نے تعلیمی اداروں کے خلاف آپریشن کو روکنے کے لئے صوبائی حکومت سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور کچھ نے قانونی طریقے سے اس معاملے کو روکنے کے لئے اپنے وکلاء سے مشاورت شروع کر دی ہے۔ دوسری طرف تمام ریلوے ڈویژنوں نے ریلوے ٹریک کے قریب تعلیمی اداروں اور کاروباری یونٹس کو چیک کرنے کے لئے سروے اور لسٹیں تیار کرنا شروع کر دی ہیں۔

مسمار

مزید :

ملتان صفحہ آخر -