دبئی انکار پر ، شوہر نے گلا دبا کر بیوی مار ڈالی ، وہوامیں نوجوان قتل

دبئی انکار پر ، شوہر نے گلا دبا کر بیوی مار ڈالی ، وہوامیں نوجوان قتل

  

وہاڑی‘ لڈن ‘ وہوا(بیورو رپورٹ+نمائندہ خصوصی‘ نامہ نگار)مختلف وجوہات پر خاتون سمیت 2 افراد قتل کردئیے گئے ۔ تفصیل(بقیہ نمبر14صفحہ12پر )

کے مطابق لڈن پولیس کی غفلت اور لا پرواہی ایک اور خاتون کی جان لے گئی دوسرے ملک جا کر کام نہ کر نے کی رنجش پر شوہر نے بیوی کو قتل کر دیا،تھانہ لڈن کے علا قہ پانچ مرلہ سکیم کے رہائشی چن شاہ نے تین بچوں کی ماں اپنی بیوی کو کہاکہ دبئی چلو اور کام کرو لیکن اسکی بیوی نے جانے سے انکار کردیا جس پر ملزم چن شاہ طیش میں آگیا اور اپنی بیوی پر کمرے میں بند کرکے تشدد شروع کردیا،ملزم کی معصوم بیٹیوں نے شور مچایا تو اظہر شاہ و دیگر آگئے جنہوں نے دروازہ کھولنے کی کوشش کی لیکن دروازہ نہ کھل سکا جس پر انہوں نے لڈن پولیس کو متعدد بار کالز کیں لیکن پولیس روائتی سستی اور غفلت کا مظاہرہ کرتے ہوئے تین گھنٹے کی تاخیر سے آپہنچی تب تک ملزم چن شاہ نے گلا دبا کر اپنی بیوی کو قتل کرچکا تھا،پولیس کے لیٹ پہنچنے پر ورثاء اور پولیس اہلکاروں کے درمیان ہاتھا پائی بھی ہوئی ورثاء نے ایک ملزم چن شاہ کو پکڑ کر پولیس کا حوالہ کر دیا مقتولہ کے بھا ئی اظہر شاہ نے صحا فیوں کو بتا یا میں نے پولیس کو تین گھنٹے پہلے اطلاع دی کہ ملزم دیگر سا تھیوں کے ساتھ ملکر میری بہن کو تشدد کا نشانہ بنا رہا ہے اور جان سے مارنا چاہتا ہے لیکن پولیس بروقت کاروائی نہ کی اور 15کی کال پر رسپانس دینے والے ائے ایس آئی رزاق نے ٹال مٹول سے کام لیا اور موقع پر آنے کی بجائے بہا نے کرتا رہا اگر پولیس بر وقت آجاتی تو میری بہن بچ سکتی تھی یاد رہے لڈن کی پولیس کے بے حسی سے چند دن قبل بھی ایک خاتون کو قتل کیا جا چکا ہے جبکہ گزشتہ 15روز میں تین خواتین قتل کی جا چکی ہیں جو کہ لڈن پولیس کی کا رکر دگی پہ سوالیہ نشان ہے۔ علاوہ ازیں وہوا کی نواحی بستی جادے والی میں گذشتہ روز نامعلوم افراد کی جانب سے چھریوں کے پے درپے وار کیے جانے کے نتیجہ میں قتل ہونے والے شفقت اللہ کی نماز جنازہ ادا کردی گئی نماز جنازہ میں چیئرمین یونین کونسل لکھانی حافظ طاہر قیصرانی، ممتاز احمد قیصرانی، حافظ شریف قیصرانی، شفیع اللہ خان، غلام فرید، عبدالجبار، محمد شریف، جمعہ خان، عبدالرحمٰن قیصرانی، محمد افضل سمیت شہریوں نے کثیر تعداد میں شرکت کی ‘ جبکہ صوبہ پنجاب اور کے پی کے بارڈر پر واقع قصبہ جادے والی میں محنت کش نوجوان کا بہیمانہ قتل افسوسناک امر ہے خیبر پختونخواہ کے جرائم پیشہ افراد کی اس قسم کی کاروائیاں معمول بن چکی ہیں جن کا سدباب نہ کیا گیا تو عوام احتجاج کرنے پر مجبور ہوگی یہ بات چیئرمین یونین کونسل لکھانی حافظ طاہر خان قیصرانی نے کہی انہوں نے کہا کہ گذشتہ روز ہونے والے قتل سے قبل بھی اس علاقہ میں قتل کی وارداتیں ہوچکی ہیں مگر انتظامیہ کی جانب سے پنجاب اور کے پی کے بارڈر کے حدود کا معاملہ بنا کر قاتلوں کو گرفتار نہیں کیا جاتا جس کے باعث علاقہ کی عوام میں شدید اشتعال پایا جاتا ہے جبکہ انتظامیہ کے اس طرح کے واقعات کے سدباب نہ کیے جانے کے باعث قاتلوں کے حوصلے مزید بلند ہورہے ہیں اور وہ اپنی کاروائیاں تواتر سے جاری رکھے ہوئے ہیں انہوں نے وزیر اعلیٰ پنجاب سے مطالبہ کیا کہ وہ فوری طور پر ان واقعات کا نوٹس لے کر مجرموں کی گرفتاری کے احکامات جاری کریں بصورت دیگر علاقہ بھر میں امن و امان کے بگڑنے کا خدشہ ہے جس کی تمام تر ذمہ داری انتظامیہ پر عائد ہوگی ۔

قتل

مزید :

ملتان صفحہ آخر -