مطالبات منظوری کیلئے آئل ٹینکرز کی ہڑتال ‘ ایسوسی ایشن دو دھڑوں میں تقسیم

مطالبات منظوری کیلئے آئل ٹینکرز کی ہڑتال ‘ ایسوسی ایشن دو دھڑوں میں تقسیم

  

ملتان ( سٹاف رپورٹر) وفاقی حکومت کی جانب سے حادثات کے پیش نظر پرانے آئل ٹینکرز بند کئے جانے کے خلاف گزشتہ روزآئل ٹینکرز کی جزوی ہڑتال رہی۔معلوم ہواہے کہ اوگرا کی جانب سے سی پیک کے تناظر میں پی ایس او میں پرانی گاڑیاں چلانے پر پابندی کا اعلان کیا گیا تھا۔اوگرانے (بقیہ نمبر35صفحہ12پر )

آئل کمپنیوں کو پرانی کی جگہ نئی گاڑیاں چلانے کے لئے مہلت دی تھی ۔اس حوالے سے آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن کے رہنما یوسف شاہوانی گروپ نے اتوار سے ملک بھر میں تیل کی سپلائی بند کرنے کا اعلان کیا ۔ان کا کہنا ہے کہ ہم نے بارہا حکومت کے سامنے مطالبات رکھے لیکن ہمارے مطالبات منظور نہیں ہوئے ۔ مطالبات تسلیم کرنے کے لئے حکومت کو دی گئی 10روزہ ڈیڈ لائن ختم ہونے کے بعد ہڑتال کا آپشن استعمال کرنے پر مجبور ہوئے۔دوسری جانب چیئرمین آئل ٹینکرز اونرز ایسوسی ایشن اسلم نیاز ی کا کہنا ہے کہ بعض ٹرانسپورٹرز نے اوگراکے ساتھ مذاکرات کئے جس کے ذمہ دار ہم نہیں ہیں۔اوگراکے ساتھ مذاکرات سے ہمارا کوئی تعلق نہیں ہے ۔ٹرانسپورٹرز کی اکثریت ہڑتال کی حامی نہیں ہے کیونکہ اس میں ان کا ہی نقصان ہے۔اس سلسلے میں پٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن ملتان کے مطابق اتوار کو جزوی ہڑتال رہی ‘ آج سوموار کو اصل صورتحال کا علم ہوگاکیونکہ ہڑتال کے معاملے میں آئل ٹینکر ز ایسوسی ایشن 2دھڑوں میں تقسیم ہو چکی ہے ۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -