معاشی بحران پر جلد قابو پالیں گے ، عمران خان، وزیراعظم آئی ایم ایف پیکج سے بچنے کیلئے سرگرم ، سعودی حکام سے ملاقاتیں سرمایہ کاری کا نفرنس میں شرکت کرینگے ، متعدد معاہدوں کا مکان ملائیشیا اور چین بھی جائینگے

معاشی بحران پر جلد قابو پالیں گے ، عمران خان، وزیراعظم آئی ایم ایف پیکج سے ...

  

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ، مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں) وزیر اعظم عمران خان نے بزنس کمیونٹی کو یقین دلایا معیشت مشکل دور سے گزر رہی ہے مگر جلد بحران پر قابو پا لیں گے ماضی کی غلط پالیسیوں کی وجہ سے اقتصادی لحاظ سے چیلنجز کا سامنا ہے بڑے بڑے قومی ادارے خسارے کا شکار ہیں ملک قرضوں میں پھنسا ہو اہے، حکومت ایکسپورٹ بڑھا نے اور خسارہ کم کرنے کیلئے ایک جامع حکمت عملی پر کام کر رہی ہے ٹیکسٹائل شعبے کے لیے گیس کا سلیب یکساں متعارف کرایا جا رہاہے اس کے ساتھ ساتھ ان پٹ ایڈجسٹمنٹ اور برآمدی شعبے کیلئے ٹیرف اور ری فنڈز پر بھی اصلاحات لائی جا رہی ہیں تاجر برادری آگے آئے اور ملک کی معاشی بحالی میں اپنا کردار ادا کرے بزنس کمیونٹی نے وزیر اعظم کو اپنے بھرپور تعاون کا یقین دلایا ۔ راولپنڈی چیمبر کے وفد نے وزیر اعظم عمران خان سے ملاقات کی اور سپریم کورٹ آف پاکستان اور وزیراعظم کے دیامر بھاشا اور مہمند ڈیم فنڈ کے لیے پچاس لاکھ کا چیک پیش کیا انہوں نے کہا کہ اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کی جانب سے بزنس کمیونٹی کے نمائندوں کو ایک بریفنگ بھی دی گئی۔ انہوں نے کہا کہ راولپنڈی چیمبر آف کامرس وزیر اعظم عمران خان اور چیف جسٹس سپریم کورٹ ثاقب نثار کی جانب سے ڈیم فنڈ کے قیام اور پانی محفوظ بنانے کے حوالے سے آگاہی مہم اور کوششوں کو سراہتاہے ۔دریں اثناوزیراعظم عمران خان نے ملک کو درپیش معاشی بحران کے حل کے لئے خود ذمہ داری سنبھال لی۔ اس مقصد کے لیے وہ آج پیر سے غیر ملکی دوروں کا آغاز کریں گے۔ سعودی عرب سے واپسی پر وزیراعظم آئندہ 3 روز سرمایہ کاروں اور صنعتکاروں کے ساتھ اعلی سطح کی ملاقاتیں کریں گے۔وزیر اعظم 28 اکتوبر کو ملائشیا جائیں گے، جہاں وہ پاک ملائشیا تعلقات اور معاشی تعاون پر بات کریں گے، جس کے بعد وزیراعظم 3 نومبر کو چین روانہ ہوں گے جہاں وہ چینی قیادت کے ساتھ سی پیک اور معاشی تعاون پر تفصیلی گفت وشنید کریں گے۔۔ترجمان دفتر خارجہ نے وزیراعظم کے دورہ سعودی عرب کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ وزیراعظم عمران خان سعودی فرماں رواں شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی دعوت پر 23 اکتوبر کو سعودی عرب کے دارالحکومت ریاض جائیں گے جہاں وہ فیوچر انویسٹمنٹ انیشی ایٹو کانفرنس دوم میں شرکت کریں گے، عمران خان کو دورے کی دعوت خاص طور پر شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے دی تھی۔کانفرنس میں ممتاز کاروباری شخصیات، سرمایہ کار، بڑی کاروباری کمپنیوں، ہائی ٹیک انڈسٹری اور ذرائع ابلاغ کے اہم اداروں کے نمائندے شرکت کررہے ہیں کانفرنس کو صحرا میں ڈیوس قراردیاگیاہے،یہ کانفرنس اہم کاروباری رہنماوں کے ساتھ رابطے کاموقع فراہم کرے گی جو پاکستان میں سرمایہ کاری کے خواہاں ہیں۔وزیراعظم عمران خان سعودی فرمانروا شاہ سلمان اور ولی عہد محمد بن سلمان سے بھی ملاقات کریں گے جس میں باہمی دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔ذرائع کے مطابق وزیراعظم کا دورہ سعودی عرب کا مقصد آئی ایم ایف بیل آٹ پروگرام سے بچنے کے لیے مالی امداد کا حصول ہے یا پھرعالمی مالیاتی ادارے سے بیل آٹ پیکچ پر مذاکرات کے موقع پر پاکستان کو مضبوط پوزیشن میں لانا ہے ذرائع کا کہنا ہے کہ پاکستان عالمی مالیاتی فنڈ سے قرضہ کے حصول کی بجائے سعودی عرب، چین اور متحدہ عرب امارات سے مالی معاونت کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔ ۔وزیر اعظم عمران خان 28اکتوبر کو ملائیشیا کے صدر مہاتیرمحمد سے ملاقات کرینگے ، ملاقات کے دوران پاکستان اور ملائیشیا ء کے مابین باہمی تعلقات اور معاشی تعاون بڑھانے پر بھی بات چیت ہوگی۔اسکے بعد وزیر اعظم چینی صدر شی پنگ سے ملاقات کیلئے 3نومبر کو چین روانہ ہونگے۔ جہاں وہ چینی قیادت کے ساتھ سی پیک اور معاشی تعاون پر تفصیلی گفت وشنید کریں گے۔ تاہم وزیر اعظم عمران خان کے دورہ چین کے حوالے سے ترجمان دفترخارجہ ڈاکٹر فیصل نے تفصیلات کو قبل ازوقت واضع کرنے سے اجتناب کرتے ہوئے کہا کہ فی الحال وزیر اعظم کے دورے کی تفصیلات سے آگاہ نہیں کرسکتے۔

سعودی عرب دورہ

اسلام آباد(سٹاف رپورٹر ،این این آئی)وزیراعظم عمران خان نے ملک بھر میں غربت مٹا ؤپروگرام شروع کرنے کا فیصلہ کر لیا،آئندہ ہفتے غربت مٹاؤ پروگرام کا اعلان کریں گے۔میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ بنی گالا میں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت مشاورتی اجلاس ہواجس میں سینیٹر فیصل جاوید،افتخار درانی سمیت دیگر اہم رہنماؤں سے شرکت کی۔اجلاس کے دوران غربت مٹا ؤپروگرام شروع کرنے سے متعلق گفتگو کی گئی۔وزیراعظم عمران خان نے ملک کی معاشی صورتحال کو ہر صورت میں مستحکم کرنے کے عزم کا اظہار کیا۔ سینیٹر فیصل جاوید کے مطابق وزیر اعظم عمران خان آئندہ ہفتے غربت مٹا ؤپروگرام کا آغاز کریں گے۔ اجلاس کے دوران وزیر اعظم عمران خان کے دورہ سعودی عرب اور چین سے متعلق بھی گفتگو کی گئی۔عمران خان نے حکومتی کارگردگی اور سو روزہ پلان کا بھی جائزہ لیا۔پاکستان تحریک انصاف نے اقتدار میں آنے سے قبل غریب افراد کے لیے 50 لاکھ گھروں کی تعمیر کا اعلان کیا تھا جس کے لیے اقتدار میں آنے کے فوری بعد کام شروع ہو گیا۔ 10اکتوبر کو وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اسکیم اتھارٹی کے قیام کا اعلان کیا اور اب حکومت نے ملک بھر میں غربت مٹا ؤپروگرام شروع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔حکومت کی طرف سے یہ فیصلہ غریبوں کے مسائل دور کرنے کے لیے کیا گیا ہے۔

غربت پروگرام

مزید :

صفحہ اول -