پاکستان کے جیلوں میں 76گستاخ رسول کے جرم پابند سلاسل ہیں : مولانا سجاد الحسین

پاکستان کے جیلوں میں 76گستاخ رسول کے جرم پابند سلاسل ہیں : مولانا سجاد الحسین

  

رستم(نمائندہ پاکستان) اس وقت پاکستان کے جیلوں میں 76افراد گستاخ رسول کے جرم پابند سلاسل ہے ، آئی ایم ایف کے قرضوں کی وجہ ان کے خلاف کاروائی نہیں رہی ، ختم نبوت کی تحفظ کے ذمہ دار صرف سیاسی پارٹی نہیں بلکہ تمام مسلمانوں پر فرض ہے ،مشال کے والد کو برٹش پاسپورٹ صرف اس وجہ سے ملا کہ وہ گستاخ رسول تھا ، پاکستان میں عدلیہ اور رسالت غلام ہے ، مغربی قوت بار بار نبی کی شان گستاخی کرتے ہے ،رسول اللہؐ کی شان میں گستاخی کسی صورت برداشت نہیں کرینگے وہ آخری نبی ہے اس کے بعد کوئی نبی نہیں آنے والا ہے ۔ ان خیالات کا اظہارنائب امیر ختم نبوت ضلع مردان مولانا سجاد الحسین ، سابقہ ایم پی اے بونیر مفتی فضل غفورمفتی منیب ، مولانا عباد اللہ کاکاخیل اور مولانا مرتضیٰ حقانی نے رستم ، چارگلی اور نواں کلی میں الگ الگ تحفظ ختم بنوت کانفرنس کے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ مقررین نے کہا کہ دنیا بھی میں ہر جگہ ناموس رسالت کے شیدا موجود ہیں خواہ گورنر ہاؤس ، صدر ہاؤس ، وزیر اعظم ہاؤس یا پارلیمنٹ ہاؤس ہو گستاخ رسول اور قادیانی فرقہ کے خلاف آواز بلند کرینگے قادیانی کے پاکستان کی آئین میں کافر قرار دیا گیا ہے دنیا کی کوئی بھی طاقت اس میں ترمیم نہیں کر سکتا قرآن کریم میں پانچ سو سے آیات ختم نبوت کی تاکید کر تی ہے ختم نبوت کا تحفظ ہر مسلمان پر فرض ہے اس کے لئے کوئی خاص طبقہ مختص نہیں کیا گیا ہے کانفرنس کے آخر میں موجود تمام شرکاء سے تحفظ ختم نبوت کا عہد بھی لیا گیااور ناموس رسالت کی سربلندی کے لئے اجتماعی دعا کی گئی ۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -