ای سی ایل میں نام ڈالنے کاطریقہ کار تبدیل کرنے کا فیصلہ، اختیار سیکرٹری داخلہ کو دینے کی سفارش

ای سی ایل میں نام ڈالنے کاطریقہ کار تبدیل کرنے کا فیصلہ، اختیار سیکرٹری ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک ، نیوز ایجنسیاں)حکومت نے ای سی ایل میں نام ڈالنے کے حوالے سے طریقہ کارتبدیل کرنیکافیصلہ ہے۔اس حوالے سے وزارت داخلہ نے سفارشات تیار کرلیں،قائمہ کمیٹی کل جائزہ لے گی۔ٹرائل کورٹ یاعدالت عظمیٰ کی ہدایت پرنام ای سی ایل میں شامل کیاجائیگا۔ ای سی ایل میں نام ڈالنے کااختیارسیکریٹری داخلہ کودینے کی سفارش کی گئی ہے جب کہ اس سے پہلے اختیارمجازاتھارٹی کوحاصل تھا۔نئی سفارشات میں لفظ مجازاتھارٹی کی جگہ سیکریٹری د اخلہ لکھنے کی تجویزبھی پیش کی گئی ہے۔ چھان بین اورتحقیقات کی سطح پرکسی کانام ای سی ایل میں نہیں ڈالاجاسکے گا۔3 سال سے ای سی ایل میں شامل نام نکالنے کی تجویزبھی دی گئی ہے۔یہ بھی سفارش کی گئی ہے کہ ان کے نام نکالے جائیں گے جن کے حوالے سے عدالتی حکم موجودنہیں ہوگا۔نام ای سی ایل میں ڈالنے سے 7 روزپہلے متعلقہ شخص کوآگاہ کرناہوگا۔۔ ڈائریکٹر جنرل کمیٹی تنویر احمد کی جانب سے تحریر سفارشات آج کمیٹی کو پیش کی جائے گی ۔ واضع رہے پاکستان پیپلز پارٹی کے سینیٹر عبدالرحمان ملک بطور چےئرمین کمیٹی کی صدارت کریں گے۔ جبکہ دیگر ممبران میں سینیٹر کلثوم پروین ، محمد جاوید عباسی ، چوہدری تنویر خان ، اسد علی خان ، رانا مقبول ، محمد طلحہ ، فاروق حامد ، شبلی فراز، حاجی مومن خان آفریدی ، محمد عتیق شیخ اور دیگر سینیٹر ز کے نام شامل ہیں۔ کمیٹی میں چےئرمین سی ڈی اے اور اسلحہ لائسنس کے اجراء کو بھی ایجنڈے میں شامل کیا گیا۔

مزید :

صفحہ اول -