نبیلہ خشوگی کے نام پر بنایا گیا بحری جہاز بعد میں ٹرمپ پرنسز بن گیا

نبیلہ خشوگی کے نام پر بنایا گیا بحری جہاز بعد میں ٹرمپ پرنسز بن گیا

  

ریاض (این این آئی)سعودی عرب کے ارب پتی بزنس مین عدنان خشوگی نے اپنی بیٹی نبیلہ خشوگی کے نام پر ایک یاٹ یعنی پْرتعیش بحری جہاز بنوایا تھا۔ بعد میں اس یاٹ کو موجودہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے دو کروڑ 90 لاکھ ڈالرز میں خریدا تھا۔یہ اٹلی کے ایک شپ یارڈ میں سنہ 1980 میں تیار کی گئی تھی، یہ اپنے وقت کی سب سے بڑی یاٹ تھی اور آج بھی اسے بڑی بڑی یاٹس میں شمار کیا جاتا ہے۔ اس میں ایک چھوٹا سا سینما، ایک جکوزی،دو سونا رومز، ایک سومنگ پول، اور چار کمروں کا ایک سویٹ ہے جس میں سونے کے سِنک لگے ہوئے ہیں۔اس کے علاوہ اس یاٹ میں 11 گیسٹ رومز، تین کمروں پر ایک ہسپتال، سٹاف کے لیے 52 کوارٹرز جبکہ اس کے ڈیکس بلٹ پروف ہیں، اس میں خفیہ راستہ بھی بنا ہوا ہے۔ یاٹ میں کمیونیکیشن کے لیے 256 ٹیلیفون لگے ہوئے تھے۔کہا جاتا ہے کہ اس یاٹ کو بنوانے میں ساڑھے آٹھ کروڑ ڈالرز لگے تھے۔ عدنان خشوگی نے اسے بنوانے کے معاہدے میں اتنی سخت شرائط لکھوائی تھیں کہ اٹلی کی کمپنی انھیں پورا کرتے کرتے دیوالیہ ہو گئی۔جب عدنان خشوگی پر 1987 میں مالیاتی طور پر بْرا وقت آیا تو اْنھوں نے نبیلہ یاٹ کو برونائی کے سلطان کو قرضے کی ادائیگی کے عوض دے دیا۔ سلطان نے بعد میں یہی یاٹ امریکہ کہ موجودہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو دو کروڑ 90 لاکھ ڈالرز میں فروخت کی۔ مسٹر ٹرمپ نے یاٹ کا نام نبیلہ سے بدل کر ’ٹرمپ پرنسز‘ رکھا۔مسٹر ٹرمپ نے اس یاٹ کی از سرِنو تزئین پر 80 لاکھ ڈالرز خرچ کر اس کو مزید جدید بنا دیا۔ لیکن جب وہ نوے کی دہائی میں خود دیوالیہ ہوئے تو انھوں نے اس یاٹ کو فروخت کرتے وقت ساڑھے 11 کروڑ ڈالرز قیمت کا مطالبہ کیا، لیکن اس یاٹ کو خریدنے والے سعودی شہزادے، ولید بن طلال نے بعد میں کہا کہ انھوں نے اس کے لیے ایک کروڑ 90 لاکھ ڈالرز ادا کیے تھے۔

بحری جہاز

مزید :

کراچی صفحہ اول -