ٹیکسٹائل مینو فیکچرنگ ٹیکسوں کو ختم کرنے کیلئے ضروری اقدامات کرینگے :اسد عمر

ٹیکسٹائل مینو فیکچرنگ ٹیکسوں کو ختم کرنے کیلئے ضروری اقدامات کرینگے :اسد عمر

  

فیصل آباد(اے پی پی )وفاقی وزیر خزانہ اسدعمر نے کہا کہ ملک میں ٹیکسٹائل کے نظام کوپرو گروتھ بنانے کیلئے ٹیکس ریفارم کمیٹی قائم کر دی گئی ہے جبکہ مینو فیکچرنگ کی سطح پر ٹیکسوں کی بھر مار کو ختم کرنے کیلئے بھی ضروری اقدامات اٹھائے جائیں گے۔ آل پاکستان ٹیکسٹائل پروسیسنگ ملز ایسوسی ایشن کی تقریب سے خطاب کے دوران انہوں نے کہا کہ محدود وسائل کے باوجود وہ ٹیکسٹائل سیکٹر کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں مہیا کرنے کیلئے کوشاں ہیں۔ انہوں نے اس سلسلہ میں گیس کی فراہمی کیلئے 44 ارب روپے کی سبسڈی کا ذکر کیا اور کہا کہ ا س سے ملکی سطح پر پیداواری عمل کو تیز کرنے کے علاوہ لوگوں کیلئے روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا کئے جا سکیں گے۔ گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس کا ذکر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وہ بھی سیاست سے قبل بزنس کرتے تھے اسلئے وہ چاہیں گے کہ اس مسئلہ کو فوری طور پر متعلقہ سٹیک ہولڈرز کی ضروریات کے مطابق حل کیا جا سکے۔ افغان ٹریڈ کے بارے میں موجودہ پالیسی کا از سر نو جائزہ لیں گے تاکہ ہمسایہ ملک کی کپڑے کی تمام ترضروریات کو پورا کیا جا سکے اس طرح نہ صرف ہماری صنعتوں میں پیداواری عمل تیز ہو گا بلکہ اس سے ہمسایہ ملک کیلئے برآمدات میں بھی کئی گنا اضافہ کیا جا سکے گا۔ ٹیکسٹائل کو ملک کی معیشت او ر برآمدات میں کلیدی اہمیت حاصل ہے اسلئے ملک بھر میں پھیلے ہوئے اس سیکٹر کے مسائل کو فوری طور پر حل کرنے کیلئے ٹیکسٹائل سیکٹر اور ٹیکسٹائل کی وزارت کے درمیان قریبی روابط کیلئے ملک بھر میں اس وزارت کے علاقائی دفاتر قائم کرنے کا بھی جائزہ لیا جائے گا ۔اس موقع پراپٹپما کے مرکزی چیئرمین انجینئر رضوان اشرف نے بتایا کہ اپٹپما ویلیو ایڈڈ ٹیکسٹائل سیکٹر کی سب سے بڑی چین ہے جبکہ ملک بھر میں اس کے تین ریجنل دفاتر ہیں۔ اس وقت سب سے بڑا مسئلہ جی آئی ڈی سی کا ہے جب پاکستان میں گیس کے ذخائر ختم ہونے لگے تو حکومت نے ایران، پاکستان اور ترکمانستان ، افغانستان، پاکستان اور انڈیا کے درمیان گیس پائپ لائن بچھانے کیلئے گیس انفراسٹرکچر ڈویلپمنٹ سیس عائد کیا تھا مگر کئی سال گزرنے کے باوجود اس پر کام ہی شروع نہیں ہو سکا۔

اسد عمر

مزید :

کراچی صفحہ اول -