داسومنصوبے پرگزشتہ حکومت نے غلط بیانی سے کام لیا،کوشش ہوگی منصوبہ 2022 تک مکمل کرلیں،فیصل واوڈا

داسومنصوبے پرگزشتہ حکومت نے غلط بیانی سے کام لیا،کوشش ہوگی منصوبہ 2022 تک مکمل ...
داسومنصوبے پرگزشتہ حکومت نے غلط بیانی سے کام لیا،کوشش ہوگی منصوبہ 2022 تک مکمل کرلیں،فیصل واوڈا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن )وزیرآبی وسائل فیصل واوڈا نے کہا ہے کہ داسومنصوبے پرگزشتہ حکومت نے غلط بیانی سے کام لیا۔کوشش ہوگی داسو منصوبہ 2022 تک مکمل کرلیں۔داسومنصوبے پر روزانہ 30 کروڑ روپے نقصان ہورہا ہے۔ اسلام آباد میں نیوز کانفرنس کرتے ہوئے وزیرآبی وسائل فیصل واوڈانے کہا کہ داسومنصوبے پرعالمی بینک کے تحفظات آچکے ہیں۔ داسومنصوبے سے 12 روپے فی یونٹ والی بجلی 5 روپے میں ملناتھی۔انھوں نے کہاکہ گزشتہ حکومت نے آبی وسائل پرتوجہ نہیں دی۔ ملک میں ڈیمزکی تعمیرکی اشدضرورت ہے۔ڈیموں کی تعمیرمیں تاخیرسے معیشت کواربوں روپے کانقصان ہواہے ۔واپڈاکوآبی مسائل سے نمٹنے کیلئے اقدامات کی ہدایت کی ہے۔فیصل واوڈا نے کہا کہ گدھوں کو اگر کرسیوں پر بٹھائیں گے تو وہ گدھوں والا کام کرے گا ۔کراچی اور باقی سندھ کو محروم نہیں ہونے دوں گا۔سندھ کے کچھ وڈیروں کو صرف ان کی اپنی ہریالی نہیں کرنے دونگا۔میں ڈرنے والا نہیں، کراچی کو پانی کی قلت سے مار دیا گیا۔ وزیر آبی وسائل نے کہا کہ صوبوں میں پانی تقسیم کے آلات بند کیوں ہیں، ٹیلی میٹری سسٹم کہاں ہیں۔میں نے سندھ کو چور نہیں کہا، میں نے کہا کہ سندھ میں پانی چوری ہوتا ہے۔پانی چوری کی روک تھام کیلیے مجھے کوئی قانون نہیں روک سکتا۔انھوں نے کہا کہ

سندھ میں داروٹ ڈیم کا مسئلہ حل کریں گے۔بھارت سے اپنا حق حاصل کریں گے۔بھارت کے ساتھ سندھ طاس معاہدے کا مسئلہ حل کریں گے۔اگر میں کچھ غلط کررہا ہوں تو قانون مجھے کئی گنا زیادہ سزا دے۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -