’میرے ابو میری امی کو۔۔۔‘ 6 سالہ بچی نے سکول میں اپنی ٹیچر سے ایسی بات کہہ دی کہ ہوش اُڑادئیے، ٹیچر نے فوراً پولیس کو کال کردی کیونکہ۔۔۔

’میرے ابو میری امی کو۔۔۔‘ 6 سالہ بچی نے سکول میں اپنی ٹیچر سے ایسی بات کہہ دی ...
’میرے ابو میری امی کو۔۔۔‘ 6 سالہ بچی نے سکول میں اپنی ٹیچر سے ایسی بات کہہ دی کہ ہوش اُڑادئیے، ٹیچر نے فوراً پولیس کو کال کردی کیونکہ۔۔۔

  

لندن(نیوز ڈیسک) گھریلو جھگڑے کے بچوں کے ذہن پر بہت بُرے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ اکثر تو ماں باپ کے جھگڑوں کے باعث خوفزدہ ہو کر سہم جاتے ہیں، مگر برطانیہ میں ایک ننھی بچی نے اپنی ماں پر ہونے والا ظلم دیکھا تو اس کی مدد کے لئے ایک حیرتناک کام کر ڈالا۔ چھ سال کی بچی نے اپنی ٹیچر کو سارا ماجرا تفصیل سے بتایا اور درخواست کر دی کہ اُس کی ماں کو اس کے باپ کی مارپیٹ سے بچایا جائے۔

میل آن لائن کے مطابق 36 سالہ جوڈی کیگنز اپنے بدفطرت خاوند سکاٹ کیگنز کے مظالم کا نشانہ گزشتہ تین سال سے بن رہی تھی۔ وہ آئے روز اُسے تشدد کا نشانہ بناتا تھا اور جبر کا یہ عالم تھا کہ اُسے فون اپنے پاس رکھنے کی اجازت نہیں دیتا تھا اور نہ ہی کسی عزیز رشتہ دار سے ملنے کی اُسے اجازت دیتا تھا۔ حد تو یہ ہے کہ جب گزشتہ سال کینسر کے باعث جوڈی کی بہن کی موت ہوئی تو سکاٹ نے اُسے آخری رسومات کی شرکت کی اجازت بھی نہیں دی۔

بدقسمت خاتون کی زندگی نجانے کب تک اس عذاب میں گزرتی کہ ایک دن اُس کی کمسن بیٹی نے اپنی ٹیچر سے کہا کہ ” میرے ابو میری امی کو بہت مارتے ہیں۔ امی تو کہتی ہیں کہ وہ ابو سے پیار کرتی ہیں مگر وہ تو انہیں بہت مارتے پیٹتے ہیں۔“ ٹیچر کا کہنا تھا کہ ”بچی اپنی ماں پر ہونے والے مظالم سے سخت رنجیدہ تھی اور درخواست کر رہی تھی کہ میں اُس کی ماں کی مدد کروں۔“

سکول ٹیچر نے ذمہ داری کا ثبوت دیتے ہوئے فوری طور پر پولیس کو اس معاملے کی اطلاع دی۔ پولیس نے سکاٹ کو گرفتار کر لیا اور تفتیش کے دوران اس نے اپنے ظالمانہ رویے کا اعتراف بھی کر لیا۔ اس کے مظالم کی تفصیل جان کر عدالت بھی یہ کہنے پر مجبور ہو گی کہ ”ہم نے ایسا شیطانی کیس پہلے کبھی نہیں دیکھا۔“ عدالت نے اس شیطان صفت شخص کو 18 سال قید کی سزا سنائی ہے جبکہ جوڈی کو علاج و نفسیاتی کونسلنگ کے لئے ڈونکاسٹر ہسپتال میں داخل کروا دیا گیا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -برطانیہ -