تحریک انصاف کراچی کے ارکان اسمبلی وزیراعظم کے سامنے پھٹ پڑے

تحریک انصاف کراچی کے ارکان اسمبلی وزیراعظم کے سامنے پھٹ پڑے
تحریک انصاف کراچی کے ارکان اسمبلی وزیراعظم کے سامنے پھٹ پڑے

  



کراچی (ویب ڈیسک) وزیراعظم عمران خان کے ساتھ ملاقات میں پاکستان تحریک انصاف کراچی کے اراکین اسمبلی پھٹ پڑے اور شکایات کے انبار لگا دیے۔اراکین نے شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت ہماری نہیں سنتی ہے، جبکہ وفاقی وزراءبھی لفٹ نہیں کراتے۔ عمران خان نے اراکین کو کراچی کی ترقیاتی اسکیموں پر عملدرآمد کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ وفاقی وزراءکراچی کے نمائندوں سے رابطے بڑھائیں، گھبرانے کی ضرورت نہیں، حکومت کہیں نہیں جا رہی، سندھ کے حالات کرپشن کی وجہ سے ابتر ہیں۔ پیر کے روز وزیراعظم عمران خان ایک روزہ دورے پر کراچی پہنچے، جہاں گورنر ہاﺅس میں پی ٹی آئی اراکین سندھ اسمبلی نے ان سے ملاقات کی۔اراکین نے وزیراعظم سے سندھ حکومت کی شکایت کی کہ شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ وہ ان کی نہیں سنتی اور وفاقی وزراءبھی نظر انداز کرتے ہیں۔اراکین کا کہنا تھا کہ کراچی نے ہمیں بھاری مینڈیٹ دیا، تاہم ڈیلور نہیں کر پارہے، ووٹرز ہم سے سوال کرتے ہیں کہ مسائل حل ہونے چاہیے۔ اراکین نے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ کراچی کے لیے اعلان کردہ 162، ارب جاری کیے جائیں، کےالیکٹرک کی غفلت سے جاں بحق افراد کے لواحقین کو بھی معاوضہ دلوائیں۔اس موقع پر وزیراعظم عمران خان نے اراکین کو حوصلہ دیتے ہوئے کہا کہ پی ٹی آئی ارکان سندھ اسمبلی کو گھبرانے کی ضرورت نہیں، حکومت کہیں نہیں جا رہی، ترقیاتی اسکیموں پر عمل جلد شروع ہوگا۔گورنر سندھ عمران اسماعیل نے وزیراعظم کو آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ حلیم عادل اور فردوس شمیم میں اختلافات ختم کروا دیے ہیں۔وزیراعظم کا کراچی میں پی ٹی آئی اراکین اسمبلی سے ملاقات میں کہنا تھا کہ شہرِ قائد کے مسائل حل کرنا صوبائی حکومت کا کام ہے، عوامی فلاح کے لیے وفاق مسائل حل کرنے میں حصہ ڈال رہا ہے، بلدیاتی نظام کراچی کے مسائل کا حل نکالنے میں معاون ہوگا، بدقسمتی سے ماضی میں کراچی کے مسائل کو نظر انداز کیا گیا۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی