لیگ سپنر عثمان قادر کی ’اچانک دریافت‘ پر شائقین کرکٹ بھی حیران، مگر کیوں؟ دلچسپ حقائق جانئے

لیگ سپنر عثمان قادر کی ’اچانک دریافت‘ پر شائقین کرکٹ بھی حیران، مگر کیوں؟ ...
لیگ سپنر عثمان قادر کی ’اچانک دریافت‘ پر شائقین کرکٹ بھی حیران، مگر کیوں؟ دلچسپ حقائق جانئے

  



لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان سے مایوس ہو کر آسٹریلوی شہریت کے حصول کی خاطر آسٹریلیا میں کلب کرکٹ، ڈومیسٹک اور بگ بیش لیگ کھیلنے والے عثمان قادر کی اچانک ”دریافت“ نے شائقین کو حیران کر دیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق جونیئر ورلڈکپ 2012ءمیں ملک کی نمائندگی کرنے والے سپنر نے ابھی تک 8 فرسٹ کلاس اور 14 لسٹ اے میچز کھیلے ہیں جبکہ مسلسل نظر انداز کئے جانے پر ان کے مرحوم والد سابق ٹیسٹ کرکٹر عبدالقادر بھی شکوے کرتے نظر آتے تھے تاہم نوجوان لیگ سپنر اچانک آسٹریلیا سے سیریز کیلئے سکواڈ میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوگئے۔

یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ عثمان قادر آسٹریول شہرت حاصل کرتے ہوئے اسی ملک کی جانب سے کھیلنے کی خواہش کا اظہار کرتے رہے ہیں اور شہریت کے حصول کیلئے انہیں مزید ایک سال ہی درکار تھا لیکن چیف سلیکٹر و ہیڈ کوچ مصباح الحق نے انہیں آسٹریلیا کیخلاف ہی ٹی 20 سیریز کیلئے قومی سکواڈ میں شامل کر لیا ہے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کے دوران ہیڈ کوچ و چیف سلیکٹر مصباح الحق سے سوال کیا گیا کہ لیگ سپنر نے آسٹریلوی شہریت کیلئے درخواست دی ہے جس پر ان کا کہنا تھا کہ میرے علم میں تو کوئی ایسی بات نہیں ہے اور انہیں وائٹ بال سے مسلسل عمدہ کارکردگی، آسٹریلیا میں کھیلنے کا تجربے اور ٹی 20 ورلڈکپ آسٹریلیا میں ہی ہونے کی وجہ سے منتخب کیا گیا ہے۔

مزید : کھیل