ترکی نے اپنے ہی تین شہروں کے میئر گرفتار کر لیے

ترکی نے اپنے ہی تین شہروں کے میئر گرفتار کر لیے
ترکی نے اپنے ہی تین شہروں کے میئر گرفتار کر لیے

  



استنبول (ویب ڈیسک) ترک پولیس نے پیر کے روز ایک کرد دہشت گرد تنظیم سے تعلق رکھنے اور دہشت گردی کا پروپیگنڈا کرنے کے شبے میں کردوں کے حمایت یافتہ تین شہروں کے میئرز کو گرفتار کرلیا ہے۔

العربیہ نے ترک سرکاری خبر رساں ایجنسی اناطولیہ کے ذرائع کے حوالے سے بتایا   کہ  ترک پولیس نے پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی سے تعلق رکھنے والے تین میئروں کو حراست میں لے لیا۔ یہ تینوں کایابینار ، بیسمیل اور کوجاکوی میں پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی کے منتخب میئر ہیں۔ اس کے علاوہ پولیس نے دیاربکر کے مستعفی میرمرزا کلی سے بھی پوچھ گچھ شروع کی ہے۔پچھلے اگست میں ، پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی (پی ڈی پی) سے تعلق رکھنے والے مرزا کلی کو مردین بلدیہ کے میئر کے عہدے سے برطرف کردیا گیا تھا۔

حکام نے مارچ میں منتخب ہونے والے ان تینوں اہلکاروں پر کالعدم کردستان ورکرز پارٹی (پی کے کے) سے روابط رکھنے کا الزام عائد کیا تھا ، جسے انقرہ اور اس کے مغربی اتحادی ایک "دہشت گرد تنظیم" قرا ردیتے ہیں۔پیپلز ڈیموکریٹک پارٹی جس پر ترک صدر رجب طیب اردوآن نے پی کے کے سے روابط کے الزامات عائد کیے ہیں سنہ 2016ء سے شدید کریک ڈاؤن اور دبائو کا شکار ہے۔کرد گروپ 'پی کے کے' سنہ 1984ء سے انقرہ کے خلاف مسلح علیحدگی کی تحریک چلا رہا ہے۔

مزید : بین الاقوامی