ملک میں مہنگائی کی وجہ کیا ہے؟ وزارت خزانہ نے نئی بات کہہ دی

ملک میں مہنگائی کی وجہ کیا ہے؟ وزارت خزانہ نے نئی بات کہہ دی
ملک میں مہنگائی کی وجہ کیا ہے؟ وزارت خزانہ نے نئی بات کہہ دی

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) ملک میں مہنگائی کا ایک طوفان آیا ہوا ہے جس کی وجوہات پر لوگ لے دے کرتے رہتے ہیں تاہم اب خود حکومت نے اس کی وجہ بیان کر دی ہے۔ ڈیلی ڈان کے مطابق وزارت خزانہ نے بتایا ہے کہ ملک میں مہنگائی آنے کی وجہ بروقت اقدامات نہ کرنا ہے۔ مالی سال 2018ءکے لیے پالیسی ایڈجسٹمنٹ میں جو تاخیر کی گئی اس سے ملک میں افراط زر ہوئی اور حالیہ مہنگائی کا طوفان اس کی بدولت آیا جس سے لوئر اور مڈل کلاسز شدید متاثر ہو رہی ہیں۔

فنانس ڈویژن کا کہنا ہے کہ مالی سال 2018ءکے دوران گیس اور بجلی کی قیمتیں بڑھانے کی مد میں ہونے والی ایڈجسٹمنٹس تاخیر کا شکار ہوئیں۔ اس کی درستی کے لیے حکومت نے مصارف مینجمنٹ اور مانیٹری پالیسی میں سکڑاﺅ لانے کے طریقے اپنائے ۔ اس کے نتیجے میں افراط زر کا دباﺅ آیا جس پر قابو پانے کے لیے سٹیٹ بینک آف پاکستان کو پالیسی ریٹ بڑھا کر 13.25فیصد تک لیجانا پڑا۔ افراط زر پر قابو پانے کے لیے کئی طرح کے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں جن میں ایک یہ ہے کہ حکومت نے سٹیٹ بینک آف پاکستان سے قرض لینا بند کر دیا ہے۔ اس کی بجائے حکومت کمرشل بینکوں سے قرض لے رہی ہے۔ اخراجات کے اعتبار سے حکومت نے سادگی کی پالیسی اپنا رکھی ہے اور سپلیمنٹری گرانٹس پر مکمل پابندی ہے اور امید ہے کہ ان اقدامات سے جلد افراط زر پر قابو پالیا جائے گا۔

مزید : علاقائی /اسلام آباد