”جج خود موقع پر جاکر دیکھ سکے گا“،فروغ نسیم نے قانون میں ترمیم کی وجہ بتادی

”جج خود موقع پر جاکر دیکھ سکے گا“،فروغ نسیم نے قانون میں ترمیم کی وجہ بتادی
”جج خود موقع پر جاکر دیکھ سکے گا“،فروغ نسیم نے قانون میں ترمیم کی وجہ بتادی

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) وفاقی وزیر قانون فروغ نسیم نے کہا ہے کہ جج کے سپاٹ انسپکشن کےلئے قانون میں ترمیم کی ہے،کسی کی رپورٹ کے بجائے جج خودجاکرسپاٹ دیکھے گاتوشفافیت یقینی ہوگی، پاکستان میں بھی وسل بلورکاتصورمتعارف کرایاجارہاہے ۔

دنیانیوز کے پروگرام ”دنیاکامران خان کے ساتھ“میں گفتگو کرتے ہوئے فروغ نسیم نے کہا کہ حکومت کا مقصد دیوانی مقدمات میں تاخیرکے معاملات کو ختم کرنا ہے۔ جج کے سپاٹ انسپکشن کےلئے قانون میں ترمیم کی ہے۔ کسی کی رپورٹ کے بجائے جج خودجاکرسپاٹ دیکھے گاتوشفافیت یقینی ہوگی۔جج کوعلم ہوگاکہ اپیلوں میں ہرطرح کی چیزچیک کی جاسکتی ہے۔ دیوانی مقدمات میں بیشترسروس غلط آدمی کوکردی جاتی ہے۔انہوں نے کہا کہ برسوں مقدمہ چلنے کے بعدغلط سروس کے باعث مقدمہ واپس بھیج دیاجاتا ہے۔ نئی ٹیکنالوجی کا استعمال نظام انصاف میں کیا جائے گا ۔ سول پروسیجر کوڈمیں ترمیم کی منظوری دی گئی ہے۔ دیوانی مقدمات کو بیک وقت دو بنچز میں سنا جائے گا۔

فروغ نسیم کا کہنا تھاکہ ایک عدالت سے اگر حکم امتناعی ہوجائے تودوسرابنچ کیس سنتارہے گا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان میں بھی وسل بلورکاتصورمتعارف کرایاجارہاہے ۔ وسل بلورکی شناخت کو راز میں رکھا جائے گا انعام دیا جائے گا، نادرا کو بااختیار بنارہے ہیں۔

مزید : قومی