سموگ خاتمے کیلئے ماہرین سے مدد لینے کی ہدایت

سموگ خاتمے کیلئے ماہرین سے مدد لینے کی ہدایت

  

ملتان(خصوصی رپورٹر)لاہور ہائی کورٹ نے سموگ کے خاتمے اور روک تھام سے متعلق درخواست پرسموگ کے خاتمے کیلئے ماہرین کی مدد لینے کی ہدایت کردی،عدالت نے فصلوں کی باقیات جلانے سے روکنے کے لئے مشینری کی سفارشات عدالت کے سامنے رکھنے کاحکم بھی دیا عدالت نے زرعی یونیورسٹی فیصل آباد اور یونیورسٹی آف ٹیکنالوجی کے ماہرین سے مدد لینے اورسموگ کے خلاف بنائے گئے سکواڈز کو فوری گاڑیاں فراہم کرنے کی بھی ہدایت کی،دوران سماعت پی ایچ کے سٹاف کی تفصیلات عدالت میں پیش کی گئیں ممبر عدالتی کمیشن نے بتایا کہ 26کلو میٹر کی اورنج لائن پر صرف پانچ مالی لگائے گئے ہیں،پی ایچ اے کے7ہزار ملازمین ہیں جن میں سے زیادہ تر گھوسٹ ہیں،پی ایچ اے افسرنے عدالت کوبتایا کہ شہر میں جنگلات لگانے سے درجہ حرارت (بقیہ نمبر29صفحہ6پر)

6درجہ سینٹی گریڈ تک کم ہوسکتا،سگیاں،لبرٹی اورماڈل ٹاون سمیت شہر بھر میں 53جنگلات لگائے گئے عدالت نے مزید جنگلات لگانے کی تفصیلات عدالت پیش کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ عدالت مزید جنگلات لگانے کی خود منظوری دے گی،ممبر عدالتی کمیشن نے مزید بتایا کہ طلباء کیلئے بسیں چلانے کے حوالے سے سیکرٹری ہائیرایجوکیشن اور سکولز کو لکھا گیا وزیراعلیٰ کے حکم پرکنئیرڈ کالج کو سرکاری بس دے دی گئی جو کہ انہیں نہیں ملنی چاہیے،کنئیرڈ کالج خود مختار ادارہ ہے سرکار کی بس عوامی کالج کا استحقاق ہے آگاہ کیاجائے کہ وزیراعلیٰ نے کس استحقاق کے تحت سرکاری ادارے کی بس کنئیرڈ کو دی،عدالت نے مذکورہ بالاریمارکس اور احکامات کے ساتھ مزید سماعت آئندہ تاریخ تک ملتوی کردی۔

سموگ کیخلاف کیس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -