اسلام آباد ہائیکورٹ، افغان نوجوان کو شناختی کارڈ جاری نہ ہونے کے کیس کا تحریری فیصلہ جاری

اسلام آباد ہائیکورٹ، افغان نوجوان کو شناختی کارڈ جاری نہ ہونے کے کیس کا ...
اسلام آباد ہائیکورٹ، افغان نوجوان کو شناختی کارڈ جاری نہ ہونے کے کیس کا تحریری فیصلہ جاری

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)اسلام آباد ہائیکورٹ نے پاکستان میں پیدا افغان نوجوان کو شناختی کارڈ جاری نہ ہونے کے کیس کا تحریری فیصلہ جاری کر دیا،چیف جسٹس اطہر من اللہ نے تحریری حکمنامہ جاری کردیا۔

عدالت کی جانب سے جاری فیصلے میں کہاگیاہے کہ پاکستان اپنی سرزمین پر ہر پیداہونے والے کو شہریت دینے کا قانون رکھتا ہے، پاکستان ایسا قانون رکھنے والے دنیا کے 30 ممالک میں شامل ہے، شہریت ایکٹ1951 کی سیکشن 4 میں یہ حق دیا گیا ہے،حافظ حمد اللہ کیس میں عدالت اس سیکشن کی تشریح کر چکی ہے۔

عدالتی فیصلے میں کہاگیاہے کہ برطانیہ نے 1983 ، فرانس نے 1993 میں اس قانون کو تبدیل کیا،پاکستان میں اس قانون میں کوئی ترمیم نہیں کی گئی،پاکستان میں پیدا ہونے والے کو شہریت دینے کا قانون آج بھی موجود ہے،افغان شہری کی درخواست پر فیصلہ کرتے ہوئے نادرا اس اصول کو مدنظر رکھے۔

مزید :

قومی -علاقائی -اسلام آباد -