" میں پاروتی کا اوتار ہوں، شیوا سے شادی کرکے ہی واپس جاؤں گی" بھارتی خاتون نے انڈیا چائنہ بارڈر پر ڈیرے جمالیے، ہٹنے سے انکار کردیا

" میں پاروتی کا اوتار ہوں، شیوا سے شادی کرکے ہی واپس جاؤں گی" بھارتی خاتون نے ...
سورس: Representational Image

  

نئی دہلی(مانیٹرنگ ڈیسک) ایک بھارتی خاتون بھارت چین بارڈر کے قریب ممنوعہ علاقے میں جا مقیم ہوئی ہے اور وہاں سے ہٹنے سے انکار کرتے ہوئے ایسی کہانی بیان کی ہے کہ سن کر آپ دنگ رہ جائیں گے۔ انڈیا ٹائمز کے مطابق ہرمندر کور نامی اس خاتون کا تعلق بھارت کے شہر لکھنو سے ہے۔ اس کا دعویٰ ہے کہ وہ ہندو دیوی ’پاروتی‘ کا اوتار ہے اور شیوا سے شادی کرکے ہی اس ممنوعہ علاقے سے جائے گی۔

رپورٹ کے مطابق ہرمندر کور کا دعویٰ ہے کہ ہندو دیوتا شیوا اس علاقے میں موجود ’کیلاش‘ نامی پہاڑ پر رہتا ہے اور وہ اس سے شادی کرنے اس علاقے میں آئی ہے۔ اس علاقے میں چونکہ عام شہریوں کا داخلہ منع ہے لہٰذا پولیس کی ایک ٹیم ہرمندر کور کو وہاں سے نکالنے کے لیے گئی مگر ناکام واپس لوٹ آئی، کیونکہ ہرمندر کور نے دھمکی دی تھی کہ اگر اسے زبردستی اس علاقے سے نکالا گیا تو وہ خودکشی کر لے گی۔

رپورٹ کے مطابق ہرمندر کور کے ساتھ اس کی ماں بھی موجود ہے۔ دونوں ماں بیٹی نے پوجا کی غرض سے اس علاقے میں جانے کی خصوصی اجازت لی تھی۔ اجازت نامے کے تحت وہ 15دن وہاں رہ سکتی تھیں۔ تاہم پندرہ دن پورے ہونے کے بعد انہوں نے وہاں سے واپس جانے سے انکار کر دیا ۔ وہ دونوں اس علاقے میں موجود ایک قدیمی مندر میں رہائش پذیر ہیں۔ حکام کا کہنا ہے کہ وہ خاتون اور اس کی ماں کو زبردستی واپس لانے کے لیے پولیس کی ایک بڑی ٹیم بھیجنے کی تیاری کر رہے ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -