عالمی سطح پر کارپوریٹ ٹیکس چوری پکڑنے کےلئے سفارشات جی 20 ممالک کو پیش

عالمی سطح پر کارپوریٹ ٹیکس چوری پکڑنے کےلئے سفارشات جی 20 ممالک کو پیش

کیرنز(آن لائن)اقتصادی ترقی و تعاون کے عالمی ادارے (اوای سی ڈی ) کے سیکرٹری جنرل اینجل گڑیا نےعالمی سطح پر کارپوریٹ ٹیکس چوری پکڑنے کے لیے بین الاقوامی قوانین میں ترامیم کے لیے سفارشات جی 20 ممالک کو پیش کردیں ہیں۔گزشتہ روزآسٹریلیا کے شہر کیرنز میں جی 20 وزرائے خزانہ اجلاس سے خطاب میں تنظیم کے سیکریٹری جنرل نے کہا کہ یہ منصوبہ ٹیکس قوانین میں نقائص دور کرنے کے لیے بین الاقوامی ٹیکس نظام کو جدید بنانے کی طرف 100 سال میں اٹھایا جانے والا سب سے بڑا قدم ہے، ٹیکس چوری کے خلاف عالمی سطح پر کریک ڈاو¿ن کے نتیجے میں 5 سال کے دوران 24 ممالک میں رضاکارانہ پروگراموں کے ذریعے 37 ارب یورو (53 ارب ڈالر) کی نشاندہی ہو چکی ہے، مزید کا خیرمقدم کیا جائے گا۔انھوں نے بتایا کہ مجوزہ پروجیکٹ کا مقصد ٹیکس کی بنیاد میں کمی اور مصنوعی طور پر کارپوریٹ منافع کو کم ٹیکس یا چھوٹ کے حامل علاقوں میں منتقل کرنے کی جارحانہ پریکٹسز کو روکنا ہے، یہ وہ مقامات ہیں جس کا قدر میں اضافے کی سرگرمی اور منافع کمانے سے کوئی تعلقات نہیں ہوتا۔ انھوں نے کہا کہ منصوبہ 44 ممالک بشمول جی 20 ارکان نے مل کرمرتب کیا ہے،منصوبے کے 7 مقاصد ہیں جس میں ٹیکس معاہدوں کے غلط استعمال کو روکنا، کم ٹیکس کے حامل ممالک میں منافع کی منتقلی پکڑنا اور ڈیجیٹل معیشت کے ٹیکس پراثرات سے نمٹنا شامل ہیں، فی الوقت کمپنیوں کی جانب سے بیرون ملک رکھے گئے سرمائے کا تخمینہ 2ٹریلین ڈالر ہے۔جی 20 اجلاس کے سربراہ آسٹریلوی وزیر خزانہ جوہاکی نے کہا کہ وزرائے خزانہ ٹیکس بیس میں کمی اور منافع کی منتقلی کے عمل سے نمٹنے پر متفق ہیں تاکہ کمپنیاں اپنے ٹیکس منصفانہ طور پر ادا کرسکیں۔

، ہم نے شفافیت اور ٹیکس چوری پر کریک ڈاو¿ن کرنے پر بھی اتفاق کیا ہے۔ انھوں نے کہا کہ جی 20 ارکان ممالک کے درمیان ٹیکس معاملات پر معلومات کے خودکار تبادلے کے لیے حتمی مشترکہ رپورٹنگ معیار کی اتوار کو توثیق کر دیں گے، اس سے ہمیں ملٹی نیشنلز اور دولت مند افراد کی بیرون ملک ا?مدنی کو پتا چل جائے گا لہٰذا ان کے پاس چھپانے کی کوئی جگہ نہیں بچے گی۔

مزید : کامرس