ہٹلر کی خفیہ ڈائری منظر عام پر آگئی

ہٹلر کی خفیہ ڈائری منظر عام پر آگئی
ہٹلر کی خفیہ ڈائری منظر عام پر آگئی

  

نیویارک(نیوز ڈیسک) ولیم پیٹرک ہٹلر جوکہ نازی ڈکٹیٹر کا بھتیجا تھا کے گھر سے ایک ڈائری ملی جس میں ٹیلر کے حوالے سے کئی انکشافات ہوئے۔ ولیم پیٹرک کے چار بیٹے آج بھی زندہ ہیں۔ اس سے قبل ٹیلر کے ورثاء میں سے کسی کے کبھی کوئی بات زبان پر نہیں لائے ہیں۔ اس ڈائری کے مطابق ٹیلر کے کچھ راز بذریعہ اجنار1910 میں منظر عام پر آئے تھے۔ جس میں پہلا انکشاف یہ تھا کہ ٹیلر نے ڈبلن میں ایک ویٹر کے طور پر کام کرنے والی آئرش خاتون سے شادی کی تھی جس کا نام برگیڈڈ ولنگ تھا۔ ٹیلر کی یہ ڈائری جسے ایک دہائی تک امریکی اور جرمنی پبلشرز چھپانے سے کتراتے رہے پہلی بار منظر عام پر آئی۔ 2005 میں امریکہ کے طابق صدر جارنا بشن نے اسے ٹیکسامن کی صدارتی لائبریری میں نمائش کیلئے رکھوایا تھا۔ اس کے بعد تحقیقاتی تنظیموں نے اس پر مکمل کام کیا اور پانچ سال کی تحقیق کے بعد پہلی مرتبہ جرمن پبلشنگ کمپنی نے ولسٹائن نے اسے شائع کردیا۔ اس ڈائری میں یہودیوں کے قتل عام اور پاگل خانوں میں ہونے والی پر اسرار اموات پر افسوس کا اظہار کیاگیا اور ساتھ ساتھ ایسے الفاظ استعمال کئے گئے جس سے ہٹیلر اور اس کی فوج کیلئے کے سز کی شدید نفرت اور غصے کا اظہار کیاگیا تھا۔28 اکتوبر 1941ء کو مقبوضہ پولینڈ کا ایک اقعہ بھی اس ڈائری کا ایک باب ہے جس میں ایک جگہ کلیز نے لکھا ہے کہ ایک فوجی نے مجھے بتایا کہ ہٹلر کے لئے کام کرنے والے SSگروپ کے چند ارکان کچھ یہودی مردوں اور عورتوں کو برہنہ کرکے ایک گہری کھائی کے کنارے جمع کرتے جا رہے تھے پھر انہوں نے ایک ایک کرکے سب کے سروں پر گولیاں داغی اور کھائی میں میں گراتے چلے گئے۔ SSارکان نے ان پر مٹی ڈالی اور نازی وہ درندے تھے جن کے لئے سخت سے سخت سزا بھی کم ہے۔ 1941ء میں موت کا ماہانہ تناسب 30ہزار تھا۔ولیم پیٹرک ہٹلر ایڈوویف ہٹلر کے سوتیلے بھائی ریلوس کا بیٹا ہے۔ اس کی ماں آئرش ہے۔ اس نے انگلینڈ میں پرورش پائی ولیم پیٹرک کو اپنے چچا ہٹلر کے ساتھ ساتھ اپنے باپ سے بھی شدید نفرت تھی اور اس کی وجہ یہ بتاتا ہے کہ اس کا والد اپنے بھائی ایڈولف کی طرح آمرانہ فطرت کا تھا اور اس نے میری ماں کو طلاق دئیے بغیر جرمنی میں ایک اور شادی کرلی۔ ولیم پیٹرک کی دارس کے مطابق 1929ء میں برلن میں پرے والا نے دورہ کیا اور تب سے پہلے میں نے اپنے چچا کو نہیں دیکھا۔ پھر 1930ء میں ہٹلر نے میرے والد سے ملاقات کی۔ یہاں کچھ تصاویر بھی بنائی گئی۔ ہٹلر میرے لئے ایک تصویر چھوڑ گئے تھے جس میں ایک اور کریم جو کہ ہٹلرکاپسندیدہ میٹھاتھا پر دستخط کئے گئے۔ہٹلر کے ساتھ میرا رشتہ اب بھی انگلینڈ میں جانا جاتا ہے۔ ہٹلر کے بہت سے روپ تھے۔وہ اپنے دوستوں میں بھی کرداروں کامالک تھا۔ہٹلر دانشوروں اور اعلیٰ کلاس کے لوگوں سے اجتناب کرتا اور ملکی اداکاروں، رقاص اور خوشامدی نوجوانوں کے پکڑ میں رہنا پسند کرتا۔ہٹلر کو گھروں سے بہت محبت تھی اور بلوں سے خوفزدہ رہتا تھا۔ اسے بچپن سے ہی بلیوں سے نفرت تھی۔ اس کا پسندیدہ کتا جرمن شیفرڈ تھا۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -