کراچی کا جلسہ مک مکا اور ناکام دھرنے سے جان چھڑانے کی کوشش ہے ،پرویز رشید

کراچی کا جلسہ مک مکا اور ناکام دھرنے سے جان چھڑانے کی کوشش ہے ،پرویز رشید ...

                     اسلام آباد( اے این این )وفاقی وزیر اطلاعات پرویز رشید نے کہا ہے کہ عمران خان نے دنیا کو پاکستان کا لاقانونیت والی ریاست کا تصور دیا،وہ لیڈر ہو کر ٹیکس اور بجلی کے بل نہیں دیتے اور پرچار قانون کا کرتے ہیں،ان کی حرکتوں کے باعث دوست مملک کے سربراہان پاکستان آنے سے ہچکچا رہے ہیں،تحریک انصاف کا کراچی جلسہ مک مکا کا حصہ اور ناکام دھرنے سے جان چھڑانے کی پالیسی تھی۔ عمران خان نے آپریشن ضرب عضب اور سیلاب سے توجہ ہٹانے کی سازش کی۔عمران خان تنقید سے پہلے چیف سیکرٹری خیبر پختونخوا ارباب شہزاد کا اپنی حکومت سے متعلق خط پڑھ لیں۔ ان کے پاس شرمندہ ہونے کے علاوہ کوئی چارہ نہیں ہوگا۔ ان کا کہنا تھا کہ اسلام آباد میں حکومت کو للکارنے والے عمران خان کے منہ سے کراچی میں ایسا کچھ بھی نہیں نکلا۔عمران خان کے بیان پر اپنے ردعمل کااظہار کرتے ہوئے پرویز رشید نے کہا کہ عمران خان نے جب لانگ مارچ کیا اس سے قبل کہا کرتے تھے کہ میں راوی کا پل کراس نہیں کروں گا تو نواز شریف کا استعفیٰ آجائے گا تو پھر کہا کہ اسلام آباد پہنچنے کے بعد آئے گا اور پھر کہا کہ ریڈ زون کے داخلے کے بعد آئے گا لیکن ان کی کوئی پیشن گوئی سچ ثابت نہیں ہوئی۔31 اگست کی تاریخ دی گئی تھی وہ بھی خیریت سے گزر گئی۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان نے سیاست میں مک مکا کی ٹیکنالوجی نکالی ہے۔ کراچی کا جلسہ بھی اسی مک مکا کا حصہ تھا جس میں کہا گیا کہ میں تمہارے بارے میں کچھ نہیں بولوں گا تم نے مجھے کچھ نہیں کہنا۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے یہ بھی اعلان کیا تھا کہ دھرنے میں اس وقت تک موجود رہیں گے جب تک مقاصد پورے نہیں ہوتے لیکن وہ روزانہ دھرنا چھوڑ کر بنی گالہ کے محل چلے جاتے ہیں اور آج کراچی پہنچ گئے ہیں یہ دھرنے سے جان چھڑانے کی پالیسی ہے۔ عمران خان کادھرنا اپنے مقاصد حاصل کرنے میں ناکام ہوچکا ہے اس لئے وہ کبھی پشاور، کبھی ملتان اور کراچی چلے جاتے ہیں۔ لوگوں کی توجہ دہشت گردوں کے خلاف آپریشن اور سیلاب متاثرین سے ہٹانے کی سازش کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ عمران خان نے سندھ میں ہندوﺅں کے ساتھ مظالم کا تو ذکر کیا لیکن خیبرپختونخوا میں سکھوں کے ساتھ ہونے والی زیادتی اور ٹارگٹ کلنگ بھول گئے ہیں۔ نواز شریف نے سندھ میں ہندوﺅں کے سر پر ہاتھ رکھا تھا عمران خان اور ان کا وزیراعلیٰ اپنے صوبے میں سکھوں کے ساتھ ہونے والے مظالم پر خاموش ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے جلسے میں شاہ محمود قریشی نے مخدوم جاوید ہاشمی کے بارے میں افسوسناک الفاظ استعمال کیے ہیں جاوید ہاشمی پاکستان کے بزرگ اور قابل احترام سیاستدان ہیں وہ ہماری جماعت بھی چھوڑ کر گئے تھے جس پر ہم نے دکھ کا اظہار ضرور کیا تھا لیکن کسی نے گندی زبان استعمال نہیں کی۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان بجلی کا بل نہیں دیتے اور اصولوں کا پرچار کرتے ہیں وہ لیڈر ہوکر ٹیکس نہیں دیتے۔ عمران خان نے دنیا میں پاکستان کا لاقانونیت والی ریاست کا تاثر دیا ہے انہیں الزامات لگانے کیلئے ثبوتوں کی نہیں مائیک کی ضرورت ہوتی ہے۔

مزید : صفحہ اول