امریکہ عرب ممالک کے خرچ پر مشرق وسطیٰ میں اسرائیل کو مضبوط کرناچاہتا ہے ، پیر فضل حق

امریکہ عرب ممالک کے خرچ پر مشرق وسطیٰ میں اسرائیل کو مضبوط کرناچاہتا ہے ، ...

  

لاہور( سٹاف رپورٹر ) جمعیت مشائخ پاکستان کے قائد پیر فضل حق نے مشرق وسطیٰ میں دہشت گردی کے واقعات کی مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ امریکہ اپنی انسانیت دشمن پالیسیوں سے باز آجائے تو دنیا میں امن قائم ہوسکتا ہے۔ جمعیت مشائخ کی سپریم کونسل کے اجلاس سے خطاب میں پیر فضل حق نے کہا کہ امریکہ اپنی عالمی چودھراہٹ کے لئے انسانیت کے ساتھ جومجرمانہ خونی کھیل کھیل رہا ہے۔ اس کی پہلے کہیں مثال نہیں ملتی۔انہوںنے کہا کہ امریکی حکمرانوں کویاد رکھنا چاہیئے کہ افغانستان اور شام میں مداخلت سے اسے سوائے رسوائی کے کچھ حاصل نہیں ہوا۔ اور اب اوباما دہشت گرد تنظیم داعش کے نام پر عرب ممالک کے خرچ پر مشرق وسطیٰ میں اسرائیل کو مضبوط کرنے کی سازش کر رہا ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ خطے کی دو بڑی طاقتوںایران اور شام کو داعش کے خلاف اتحاد سے باہر رکھنے سے واضح ہوگیا ہے کہ وہ عرب ممالک سے اسرائیل کے تحفظ کے لئے حمایت چاہتا ہے، جو ان دوممالک کی موجودگی میں ممکن نہیں تھی۔ ان کا کہنا تھاکہ امریکہ نے پہلے القاعدہ اور طالبان کی طرح داعش کو خود ایک سازش کے تحت تیار کیا۔ اور اب اس کے خلاف کارروائیوں کی آڑ میں عرب ممالک کو ڈرا کر اس کے خلاف اتحاد کروادیا۔ تاکہ عرب ممالک کے وسائل کو ہڑپ کرسکے۔قائد جمعیت مشائخ نے کہا کہ ایران پر نظر رکھنے اوراسرائیل کے مفادات کے تحفظ کے لئے امریکہ عراق اور شام میں داعش کی سرکوبی کی بنیاد پر تسلط جمانا چاہتا ہے۔ا نہوں نے کہا کہ امریکہ کی پالیسیاں تضادات اور منافقت سے بھر پور ہیں۔ جبکہ عرب ممالک اس کے آلہ کار بنے ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ انتہاپسند دہشت گرد تنظیم داعش کے خلاف کارروائی ہونی چاہیے، مگر امریکہ اس تنظیم کے خلاف کارروائی کی آڑ میں جو واردات کرنا چاہتا ہے اس کے علاقے پر بہت منفی اثرات مرتب ہوں گے۔ پیر فضل حق نے کہا کہ امریکی سازشوں کے مقابلے کے لئے مسلمانوں کو اپنی صفوں میں اتحاد پیدا کرناہوگا۔ مسلمانوں کی علاقائی اور مسلکی بنیادوں پر تقسیم سے اسلام دشمن قوتوں نے فائدہ اٹھایا۔ان کا کہنا تھا کہ اسلام دشمن قوتیں مسلم ممالک کی طاقت کو توڑنا چاہتی ہیں۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -