1منٹ میں صحت بہتر کرنے کے حیران کن طریقے

1منٹ میں صحت بہتر کرنے کے حیران کن طریقے
1منٹ میں صحت بہتر کرنے کے حیران کن طریقے

  

لندن(نیوز ڈیسک) جب بات ہو صحت مند زندگی گزارنے کی تو ہم سب یہ جانتے ہیں کہ ہمیں کیا کرنا چاہئے، بہتر خوراک، روزانہ ورزش اور بہتر اور پوری نیند صحت مند زندگی گزارنے کے لئے ضروری ہے، لیکن جب تھکا دینے والا شیڈول ہمارے رستے میں حائل ہو تو اور اس طرح کی طرز زندگی میں ایسا کرنا مشکل بلکہ ناممکن لیکن آخر ان چیزوں کے لئے کس کے پاس وقت ہے، سارا دن اس مشکل شیڈول سے چپکے رہنے سے بہتر ہے کہ ہم اسے ترک کر دیں لیکن آپ کو یہ سن کر خوشی ہو گی کہ آپ ہر دن اس جھنجھٹ میں پڑے بغیر اپنی صحت کو فروغ دے سکتے ہیں۔ ذیل میں کچھ صحت کے ماہرین کے بتائے ہوئے طریقے دیئے جا رہے ہیں، جن پر عمل پیرا ہونے کے لئے آپ کو روز مرہ زندگی سے صرف ایک منٹ اضافی خرچ کرنا ہو گا لیکن اس کے نتائج جہاں تک آپ کی صحت کا سوال ہے تو حیران کن ہوں گے۔

اگر میٹھا کھانے سے دوپہر کے اوقات میں یا رات کے کھانے کے بعد درد ہوتا ہو تو اس کا مطلب ہے کہ آپ کو میٹھے کی لت لگ چکی ہے، حالانکہ میٹھے سے بڑی اچھی طرح نپٹا جا سکتا ہے۔ آخر میٹھا کھانے کے بعد آپ کو اس کی لت کیوں پڑ جاتی ہیں؟ حالانکہ اس کا سادہ سا علاج موجود ہے۔ اینوس کہتی ہے کہ میٹھے کی عادت فطری مٹھاس والی چیز مثلاً کیلے کے ساتھ پی نٹ بٹر سے بدل دیں یا پھر دہی کے ساتھ بیریز کا استعمال کریں۔ کیلا چونکہ میٹھا ہوتا ہے اس لئے آپ کے اندر میٹھے کی خواہش کو پورا کرتا ہے، لیکن اس میں مزید چینی شامل نہ کریں۔ یہ فائبر سے بھرپور فوری ذریعہ ہے جو آپ کو سیر ہونے کا احساس دلائے گا۔ چینی کی خواہش کو پورا کرنے کے لئے اگر آپ دہی والا رستہ استعمال کرتے ہیں تو ساتھ بیریز کا استعمال کر لیں جو ایک فطری کینڈی کے طور پر کام کرے گی، کیونکہ ان میں بھی فطری طور پر چینی موجود ہوتی ہے۔

ایک منٹ تک کھڑا رہیں اور اپنی عمر بڑھائیں

اگر آپ اپنی عمر بڑھانا چاہتے ہیں تو ابھی اُٹھ کر کھڑے ہو جائیں ہم میں سے اکثر لوگ اپنے دن کا زیادہ تر حصہ بیٹھ کر گزارتے ہیں۔ ذرا ایک سیکنڈ کے لئے اپنے دن بھر کے کام کاج پر غور کریں جو سارا دن آپ نے بیٹھ کر کیا ہے۔مثلاً دفتر میں اپنے ڈیسک پر بیٹھے رہے ہیں ، گاڑی چلاتے رہے ہیں۔ ٹی وی دیکھتے رہے ہیں اور بیٹھ کر کھانا کھایا وغیرہ اس ضمن میں، مَیں ایک سٹڈی کا حوالہ دوں گا جس کے مطابق وہ لوگ جو اپنی زندگی کا بیشتر حصہ بیٹھ کر گزارتے ہیں۔ نسبتاً زیادہ ذہنی و نفسیاتی عوارض کا شکار ہوتے ہیں۔ اینوس کے مطابق ایسی عورتیں جو دن بھر 10گھنٹے سے زیادہ کا عرصہ بیٹھ کر گزارتیں ہیں ان لوگوں کی نسبت جو پانچ چھ گھنٹے بیٹھ کر گزارتے ہیں زیادہ عارضہ قلب میں مبتلا ہو جاتی ہیں وہ کہتی ہے کہ جب آپ کے ذہن میں کھڑا ہونے کا خیال آئے تو صرف ایک منٹ کے لئے کھڑا ہونا، عام وقت کے مقابلے میں زیادہ آپ کی صحت کے لئے اہم اور مفید ہے۔ امریکن کینسر سوسائٹی کے ایک سروے کے مطابق ایسی عورتیں جو روزانہ چھ گھنٹے سے زائد بیٹھی رہتی ہیں ان میں کم وقت بیٹھی رہنے والی عورتوں کی نسبت 34فیصد شرح اموات زیادہ ہے۔ اینوس کے بقول چھ گھنٹے بیٹھنے رہنے والے مرد حضرات چھ گھنٹے سے کم بیٹھے رہنے والے مردوں سے 17فیصد زائد شرح اموات رکھتے ہیں۔

اپنا موڈ تبدیل کیجئے چاکلیٹ کھائیے

آپ جانتے ہیں کہ جو کچھ بھی آپ کھاتے ہیں آپ پر اثر انداز ہوتا ہے اور آپ ویسے ہی دکھائی دیتے ہیں۔ یہ الگ بات ہے کہ آپ نے کیسے محسوس کیا۔اس سلسلے میں محققین کی تحقیق کہتی ہے کہ جو لوگ ہلکی پھلکی غذائیں کھاتے ہیں ان میں عام لوگوں کی نسبت ذہنی دباﺅ15فیصد زائد ہوتا ہے اس میں اینوس نے یہ کہتے ہوئے اضافہ کیا ہے کہ لوگ جتنا کھاتے جاتے ہیں اتنا ہی وہ ڈپریشن کا شکار ہوتے جاتے ہیں۔ اس سے ہمارے Eating Cycle پر روشنی پڑتی ہے جب ہم اداس ہوتے ہیں تو چپس کے بیگ یا آئس کریم کے کارٹن میں ہمیں تسکین ملتی ہے، تو ایسی حالت میں اپنے موڈ کو بدلنے کے لئے اگلی بار آپ کو چاہئے کہ شغلِ مے نوشی اور جنک فوڈ سے خود کو تسکین دینے کی بجائے ایک چاکلیٹ کھا کر اپنا موڈ تبدیل کریں اس سے آپ کے میٹھا کھانے کی خواہش بھی دب جائے گی اور آپ کو اچھا محسوس ہو گا۔

دانت برش کریں

ہلکی پھلکی چیزیں کھانے کی طلب ہماری دشمن ہوتی ہے کیونکہ یہ ہمارے کھانا کھانے کی خواہش میں کمی کرتی ہیں آپ سنیکس کھانے کی خواہش کے خلاف جنگ جیت سکتے ہیں اگر آپ کے پاس اینوس کا دیا ہوا ون منٹ ٹپ کا اسلحہ موجود ہے اور وہ یہ ہے کہ اپنا پسندیدہ کھانا یا مشروب پینے کے بعد آپ ایک منٹ تک اپنے دانت صاف کیجئے۔ دانت برش کرنے کے بعد ان کا ذائقہ آپ کے کام و دہن سے ختم ہو جائے گا۔ برش کرنے سے نہ صرف سنکیس کی طلب میں کمی ہوتی ہے بلکہ ٹوتھ پیسٹ کے پودینے والے ذائقے سے آپ کے حلق میں موجود غیر صحت مند سنیکس کا ذائقہ ختم ہو جائے گا۔

ہفتے میں ایک بار ایک منٹ تک اپنا وزن چیک کریں

حالانکہ ڈاکٹر اکثر زیادہ کھانے والوں کو اپنا وزن چیک کرنے سے منع کرتے ہیں، جس سے موٹاپا ان کے اعصاب پر سوار رہتا ہے اور اکثر اوقات موٹے لوگ پچھلی بار کیا ہوا وزن بھول جاتے ہیں اس لئے ہفتے میں ایک بار صرف ایک منٹ تک وزن ماپنے والی مشین پر کھڑا ہونا آپ کو اس قابل بناتا ہے کہ آپ اپنا وزن کنٹرول میں رکھ سکتے ہیں۔

ایک چمچ السی کے بیج کا استعمال بھوک کو دباتا ہے

جب ہمارے معدے میں گڑگڑاہٹ ہوتی ہے تو ہم جو بھی پاس میسر ہوتا ہے کھا لیتے ہیں، جس کا نتیجہ زائد کھانے کی صورت میں نکلتا ہے خصوصاً گھر آنے اور کھانا کھانے کے دوران جب ہماری بھوک عروج پر ہوتی ہے، لیکن اس وقت ہمیں کھانا کھانے کے لئے تیار رہنے کی ضرورت ہوتی ہے۔ اینوس اس سلسلے میں ہمیں ون منٹ ٹپ دیتی ہے جس کی مدد سے ہم اپنی بھوک اور رات کے مکمل کھانے سے پہلے پیدا ہونے والی ہلکی پھلکی غذا کی خواہش کو لگام دے سکتے ہیں۔ ایسی صورت حال سے نپٹنے کے لئے ایک چمچ السی کے بیج کھا لینے سے ہم گھر پہنچے اور مکمل کھانا کھانے تک انتظار کرنے کے قابل ہو جاتے ہیں، کیونکہ اس کے بیجوں میں زیادہ فائبر ہوتے ہیں جو فطری طور پر بھوک کو دبانے کا کام کرتے ہیں۔

اپنے کچن کی بتیاں بجھا کر رکھیں

وزن کم کرنے کی نیت سے رات کا کھانا چھوڑنا اس صورت میں مفید ہوتا ہے کہ ہم بھوک روکنے کے لئے اضافی کیلوریز کا استعمال ترک کر دیں، لیکن ہوتا یہ ہے کہ ہم میں سے اکثر رات کے وقت ہلکی پھلکی غذا کھاتے ہیں کہ اصل بھوک سے زیادہ کیلوریز ہمارے جسم میں چلی جاتی ہیں۔ اس ضمن میں شام چھ بجے کے بعد کھانا نہیں کھانا چاہئے۔اینوس ہمیں اس سے بچنے کے لئے ایک چالاک طریقہ بتاتی ہے۔ اگر آپ رات9بجے سوتے ہیں تو اگر آپ چھ بجے کھائیں گے تو9بجے تک بھوک نہیں لگے گی اس کے لئے ضروری ہے کہ اضافی کھانے سے بچنے کے لئے باورچی خانے کا دروازہ بند رکھیں اور کچن کی بتیاں بجا رکھیں۔

مزید : تعلیم و صحت