سانحہ یوحنا آباد،ملزموں پر فرد جرم عائد کرنے کیلئے سماعت 5اکتوبر تک ملتوی

سانحہ یوحنا آباد،ملزموں پر فرد جرم عائد کرنے کیلئے سماعت 5اکتوبر تک ملتوی

  



لاہور(نامہ نگار)انسداد دہشت گردی کی عدالت نے یوحنا آباد چرچ میں دہشت گردی کا واقعہ ہونے کے بعد وہاں کے رہائشی مسیحوں کا احتجاج کرتے ہوئے دو بے گناہ مولویوں کو زندہ جلانے کے الزام میں ملوث یوحنا آباد کے69 ملزموں کو مقدمہ کی نقول تقسیم کرتے ہوئے ان پر فرد جرم عائد کرنے کے لئے5 اکتوبر تک سماعت ملتوی کردی ہے ۔استغاثہ کے مطابق یوحنا آباد میں دپشت گردی کا واقعہ ہوا جس میں دہشت گردوں نے چرچ میں بم دھماکہ کیا جس کے نتیجے میں متعدد عیسائی ہلاک ہوئے اس واقعہ انہوں نے احتجاج کرتے ہوئے فیروز پور روڈ بند کردیا اس دوران وہاں سے دو مسلمان مولوی گزرے تو میسحوں نے انہیں پکڑ کر زندہ جلا دیا جس پر تھانہ نشتر کالونی پولیس نے ان کے خلاف دہشت گردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج کرکے چالان سماعت کے لئے انسداد دہشت گردی میں پیش کیا ہوا ہے گزشتہ روز سماعت کے موقع پر عدالت نے ملزموں کو مقدمہ کی نقول فراہم کرتے ہوئے فرد جرم عائد کرنے کے لئے 5 اکتوبر تک سماعت ملتوی کردی۔

مزید : میٹروپولیٹن 4


loading...