1965کی جنگ میں افواج نے بہادر ی کی داستانیں رقم کیں،پروفیسر رفیق

1965کی جنگ میں افواج نے بہادر ی کی داستانیں رقم کیں،پروفیسر رفیق

  



لاہور(جنرل رپورٹر)پاکستان کی تاریخ میں 1965ء کی جنگ کے سترہ دن بہت اہمیت رکھتے ہیں اس جنگ میں ہماری بہادر افواج نے جرأت و بہادری کی لازوال داستانیں رقم کیں ان خیالات کااظہار مقررین نے ایوان کارکنان تحریک پاکستان ،لاہور میں تقریبات یوم دفاع کے سلسلے میں خواتین کیلئے خصوصی نشست کے دوران کیا۔اس موقع پر نظریۂ پاکستان ٹرسٹ کے وائس چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد،ٹرسٹ کے شعبۂ خواتین کی کنوینر بیگم مہناز رفیع ، کنوینر مادرملتؒ سنٹر پروفیسر ڈاکٹر پروین خان، بیگم ثریا کے ایچ خورشید،چیئرپرسن لاہور لیڈیز کلب بیگم تسلیم بشیر سمیت کلب کی دیگر عہدیدار خواتین بڑی تعداد میں موجود تھیں۔ پروفیسر ڈاکٹر رفیق احمد نے کہا کہ قوم کا دفاع بڑی اہمیت رکھتا ہے،پاک فوج کا شمار دنیا کی بہترین افواج میں ہوتا ہے آج ہر شعبہ میں خواتین مردوں کے شانہ بشانہ کام کررہی ہیں ملک میں کسی بھی ہنگامی صورتحال سے بچنے کیلئے خواتین کیلئے تربیتی پروگرام ہونے چاہئیں ہر خاتون کو فرسٹ ایڈ کی تربیت دی جائے پرائیویٹ کلبوں پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ خواتین کو ملکی تعمیر و ترقی میں اپنا بھرپور کردار ادا کرنے پر آمادہ کر یں ۔ قائداعظمؒ کے افکارونظریات کو عام کیا جائے پروفیسر ڈاکٹر پروین خان نے کہا 1965ء کی جنگ میں ہماری بہادر افواج نے شجاعت و بہادری کی لازوال داستانیں رقم کیں۔ مسلمان بت شکن اور ہر لحاظ سے ہندوؤں سے الگ قوم ہیں ،یہی دوقومی نظریہ ہے جس کی بنیاد پر پاکستان حاصل کیا گیا۔بیگم ثریا کے ایچ خورشید نے کہا مسلمانان برصغیرکی بے شمار قر با نیو ں کے بعدیہ مملکت خداداد معرض وجود میںآئی،ہمیں آزادی کی قدر کرنی چاہئے۔بیگم تسلیم بشیر نے کہا’’ پاکستان کا مطلب کیا۔۔۔ لا الہٰ الا اللہ‘‘ پر پوری طرح عمل کرنے کی ضرورت ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1