پوپ فرانسس امریکہ کے 6روزہ دورے پر آج واشنگٹن پہنچیں گے

پوپ فرانسس امریکہ کے 6روزہ دورے پر آج واشنگٹن پہنچیں گے

  



واشنگٹن(اظہر زمان، بیوروچیف) کیتھولک چرچ کے عالمی سربراہ پوپ فرانسس امریکہ کے چھ روزہ دورے پر آج واشنگٹن پہنچ رہے ہیں۔ بعد میں وہ نیویارک بھی جائیں گے اور آخر میں فلاڈلفیا میں دنیا بھر سے آئے ہوئے کیتھولک نمائندوں کے اجتماع میں جسے ’’ ورلڈ میٹنگ آف فیملیز‘‘ کہا جاتا ہے شرکت کریں گے۔ 78 سالہ پوپ پہلے ہی کیوبا پہنچ چکے ہیں جن کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ انہوں نے امریکہ اور کیوبا کے سفارتی تعلقات کی بحالی میں اہم کردار ادا کیا ہے۔ معلوم ہوا ہے کہ صدر بارک اوبامہ انہیں خصوصی پروٹوکول دینے کے لئے منگل کی سہ پہر واشنگٹن کے قریب اینڈرویوز فیلڈ کے امریکی فضائیہ کے اڈے پر خود استقبال کریں گے۔ تاہم بدھ کے روز پوپ فرانسس وائٹ ہاؤس میں صدر اوبامہ سے باقاعدہ ملاقات کریں گے ۔ بدھ کی صبح صدر اوبامہ سے ملاقات کے بعد پوپ میتھیوز کتھیڈرل میں امریکی بشپ کے ہمراہ عبادات کی قیادت کریں گے۔ اس روز وہ عظیم مذہبی اجتماع سے خطاب کریں گے۔ بعد ازاں وہ جمعرات کو کانگریس کے دونوں ایوانوں کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کریں گے اور اس طرح کانگریس سے خطاب کر نے والے پہلے پوپ قرار پائیں گے۔ جمعرات کی سہ پہر وہ اینڈریوز کے فضائی اڈے سے نیویارک روانہ ہو جائیں گے۔ جمعہ کی صبح پوپ اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کا دورہ کریں گے اور شام پانچ بجے سنٹرل پارک میں اسی ہزار افراد کے جلوس کی قیادت کریں گے۔ ہفتے کی صبح پوپ فرانسس فلاڈلفیا پہنچیں گے۔ جہاں سب سے بڑی تقریب کیتھولک چرچ سے وابستہ دنیا بھر کے نمائندوں کا عظیم اجتماع ہے جس سے وہ خطاب کریں گے۔ اس اجتماع میں امریکہ میں پاکستانی کرسچن تنظیم کے سربراہ انجم بھٹی، ان کی اہلیہ مار گریٹ انجم بھٹی، ندیم نذیر، آرین کامران اور فرحت ہمالا خصوصی دعوت پر شرکت کر رہے ہیں۔ پوپ فرانسس کی آمد کے موقع پر امریکی میڈیا میں تبصرے جاری ہیں جن کے مطابق سرمایہ دار ملک امریکہ کے سربراہ کو پوپ غریبوں کی بہتری کے لئے کام کرنے کی ضرورت پر زور دیں گے۔ پوپ کا پیغام اوبامہ کے لئے غیر اطمینان بخش بھی ہو سکتا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...