داعش عراق کے 40اورشام کے 50فیصد حصے قابض

داعش عراق کے 40اورشام کے 50فیصد حصے قابض

  



 تاشقند، ازبکستان(ڈی این ڈی)عسکریت پسند تنظیم داعش کے قبضے میں عراق کی 40فیصد اور شام کی 50فیصد زمین آچکی ہے جبکہ اس کے جنگجوؤں میں وسطی ایشیا ئی ممالک سے3000 اور روس سے2400 افراد کے علاوہ فرانس، برطانیہ، جرمنی، امریکہ، سعودی عرب کے شہری بھی شامل ہیں۔ وفاقی سلامتی سروس کے ڈپٹی ڈائریکٹر (ایس سی او ) سمرنو نے تاشقند میں ہو نے والے شنگھائی تعاون تنظیم(ایس سی او) کے علاقائی انسداد دہشت گردی کے اجلاس میں بتائی۔سمر نو ن کا کہنا تھاکہ ان کے تخمینوں کے مطابق، روس کے تقریبا 2400 شہریوں نے پہلے ہی اس دہشت گرد تنظیم کی سرگرمیوں میں حصہ لیا اور یہ بہت بڑی تعداد ہے۔کرغستان کی وزارت داخلہ کے سربراہ ولادیمیرنے کہاکہ ایس سی او کے رکن ممالک سمیت مختلف ممالک کے شہریوں کی اسلامی ریاست میں بھرتی ایک خطرہ ہے اور سب سے زیادہ خطرناک بات ہے وہ جنگ کے تربیت حا صل کرنے کے بعد وطن واپس آرہے ہیں اور اس کام کے لیے وہ ان کے علاقے بھی استعمال کریں گے۔ ر وس کے تقریبا2500 شہری اور دیگر سابق سوویت ممالک کے7000 شہری شام میں سرگرم داعش کی صفوں میں شامل ہیں۔اس بارے میں روس کے سماجی ایوان کی کمیٹی برائے عوامی سفارت کاری کی سربراہ یلینا سوتورمینا نے بتایا کہ ان کے مطابق بھرتی کرنے والے روس کے دور درازگاؤ ں پر خاص توجہ دیتے ہیں جہاں نوجوانوں کے لیے زندگی میں اپنا مقام ڈھونڈنا مشکل ہوتا ہے ۔واضح رہے کہ داعش کو روس میں کالعدم قرار دیا گیا ہے ۔ سی آئی اے کا اندازہ ہے کہ داعش کے جنگجوؤں کی کل تعداد30,000کے قریب ہے جبکہ عراقی حکام دو لاکھ کی بات کر رہے ہیں۔ داعش کی صفوں میں فرانس، برطانیہ، جرمنی، امریکہ، سعودی عرب کے شہری شامل ہیں اوراندازوں کے مطابق داعش کے کنٹرول میں عراق کی40 فی صد اور شام کی 50 فی صد سرزمین آچکی ہے۔

مزید : علاقائی


loading...