رواں سال 10 ہزار یہودی شرپسندوں کی مسجد اقصیٰ کی بیحرمتی،سینکڑوں فلسطینی گرفتار

رواں سال 10 ہزار یہودی شرپسندوں کی مسجد اقصیٰ کی بیحرمتی،سینکڑوں فلسطینی ...
رواں سال 10 ہزار یہودی شرپسندوں کی مسجد اقصیٰ کی بیحرمتی،سینکڑوں فلسطینی گرفتار

  



مقبوضہ بیت المقدس (این این آئی) فلسطین میں سامنے آنیوالی تازہ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ رواں سال کے دوران 10 ہزار یہودی شرپسندوں نے فوج اور پولیس کی فول پروف سیکیورٹی میں مسجد اقصیٰ میں داخل ہوکر قبلہ اول کی کھلے عام بے حرمتی کا ارتکاب کیا ۔ کیوپریس کی جانب سے جاری بیان کے مطابق رواں سال 2015 ءکے دوران اب تک مجموعی طورپر 9954 یہودی آباد کاروں نے قبلہ اول میں گھس کر اس کی بے حرمتی کی۔ یہ تمام اعدادو شمار یکم جنوری سے 20 ستمبر تک جمع کئے گئے ہیں۔ رپورٹ کے مطابق سب سے زیادہ یہودی آبادکاروں کی یلغار حالیہ دنوں میں یہودیوں کی مذہبی عیدوں اور عبرانی سال نو کے موقع پر دیکھی گئی۔ رپورٹ کے مطابق 8391 یہودی آباد کاروں نے اجتماعی شکل میں ٹولیوں میں روزانہ کی بنیاد پر مسجد اقصیٰ کی بے حرمتی کی۔ ان میں 921 اسرائیلی ملٹری اورپولیس انٹیلی جنس کے اہلکار اس کے علاوہ ہیں۔ 335 اسرائیلی فوجیوں نے انفرادی طورپر سادہ کپڑوں میں مسجد اقصیٰ میں گھس کرمقدس مقام کی بے حرمتی کی جب کہ قبلہ اول میں داخل ہونےوالوں میں اسرائیلی محکمہ آثار قدیمہ کے 307 اہلکار بھی شامل ہیں۔ رواں سال کے نو ماہ میں اب تک اسرائیلی پولیس نے مسجد اقصیٰ سے277 فلسطینیوں کو حراست میں لیا۔ ان میں سے بیشتر کو دو ہفتوں سے 6 ماہ تک کےلئے قبلہ اول میں داخل ہونے پرپابندی عائد کی گئی۔

مزید : بین الاقوامی


loading...