چھ میجر جنرل ترقی کے لئے نظر انداز ،حاضر سروس سپرسیڈڈ جرنیلوں کی تعداد 50ہوگئی

چھ میجر جنرل ترقی کے لئے نظر انداز ،حاضر سروس سپرسیڈڈ جرنیلوں کی تعداد ...
چھ میجر جنرل ترقی کے لئے نظر انداز ،حاضر سروس سپرسیڈڈ جرنیلوں کی تعداد 50ہوگئی

  



لاہور(سعید چودھری )پاک فوج کے 4میجر جنرلوں کو اگلے عہدہ پر ترقی ملنے سے6میجر جنرل سپر سیڈ ہوگئے ہیں ،یوں پاکستان آرمی میں حاضر سروس سپرسیڈڈ میجر جنرلوں کی تعداد 50ہوگئی ہے ،پروموشن بورڈ کے اجلاس میں جو میجر جنرل اس مرتبہ لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ پر ترقی کے لئے نظر انداز ہوئے ہیں ان میں کمانڈنٹ سکول آف انفینٹری اینڈ ٹیکٹس میجر جنرل محمد جعفر ،نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کے چیف انسٹرکٹر میجر جنرل سید نجم الحسن شاہ ،ڈی جی ہیوی انڈسٹریز ٹیکسلا میجر جنرل محمد معظم علی، ڈی جی ڈاکٹرائن اینڈ ایویلیوایشن ( ڈی اینڈ ای )میجر جنرل غلام قمر ، میجر جنرل فہیم العزیز اورڈی جی آر ٹلری میجر جنرل فرحان اختر شامل ہیں۔

ذرائع کے مطابق لیفٹیننٹ جنرل کے طور پر ترقی کے لئے میجر جنرلوں کی کمانڈ بشمول یونٹ کمانڈ ، بریگیڈ کمانڈ اور گیرڑن کمانڈ کے تجربے اور فوج کے مختلف کورسز میں کارکردگی کو بنیادی حیثیت حاصل ہے تاہم متعلقہ افسروں کی ساکھ ،جونیئرز کے ساتھ رویہ اورکمانڈ کی صلاحیت کا بھی جائزہ لیا جاتا ہے۔لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ کے لئے عام طور پر نظر انداز یا سپر سیڈ ہونا مذکورہ وجوہات کی وجہ سے ہوتا ہے اور اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ترقی کے لئے نظر انداز ہونے والا فوجی افسر اچھی شخصیت کا حامل نہیں ہے۔لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ پر ترقی کے لئے میجر جنرل کا گیرڑن آفیسر ان کمانڈ (جی او سی )کے طور پر تجربہ ہونا ضروری خیال کیا جاتاہے ،یہی وجہ ہے کہ لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ پر ترقی کے لئے نظر انداز ہونے والوں میں ایجوکیشن ، انجینئرنگ ، میڈیکل ،ریمانٹ اینڈ فارمز اورنان کمانڈنگ کور زکے میجر جنرلوں کی تعداد زیادہ رہتی ہے ،جس کاپتہ اس وقت حاضر سروس سپر سیڈڈ میجر جنرلوں کے عہدوں سے بھی چلتا ہے۔

ذرائع نے بتایا ہے کہ اس سے قبل 44حاضرسروس میجر جنرل ایسے ہیں جو بوجوہ لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ پر ترقی کے لئے نظر انداز کئے جاچکے ہیں ۔جن میجر جنرلوں کو لیفٹیننٹ جنرل کے عہدہ پر ترقی دی گئی ہے ان میں سے آئی ایس پی آر کے سربراہ عاصم سلیم باجوہ سپرسیڈڈ میجر جنرلوں کے بعد سینئر ترین میجر جنرل تھے ،ان کے بعد ایک میجر جنرل جوکمانڈنٹ سکول آف انفینٹری اینڈ ٹیکٹس کے عہدہ پر فائز ہیں سپرسیڈ ہوئے ،جن کے بعد سنیارٹی میں جی او سی 35ویں انفینٹری ڈویژن میجر جنرل صادق علی کا نمبر آتاتھا جنہیں لیفٹیننٹ کے عہدہ پر ترقی ملی ہے ،ان کے بعد پانچ میجر جنرل نظر انداز ہوئے اورپھر سنیارٹی میں بالترتیب میجر جنرل عمر فاروق درانی (وائس چیف آف جنرل سٹاف)اور میجر جنرل عامر ریاض (ڈی جی ملٹری آپریشنز)کا نمبر تھا ، ان دونوںکو بھی لیفٹیننٹ کے عہدہ پر ترقی دے دی گئی ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں


loading...