خیبر ایجنسی ،خیبر سپر چیلنج مقابلے شروع ہوگئے

خیبر ایجنسی ،خیبر سپر چیلنج مقابلے شروع ہوگئے

خیبر ایجنسی (بیورورپورٹ)خیبر ایجنسی میں پولیٹیکل ایجنٹ خالد محمودکی تعاون ،،خیبر سپر چیلنج ،،مقابلے شروع ہو گئے ،مقابلوں میں سکولوں کے طلباء کے علاوہ عام لوگ اور کھلاڑی اپنا لوہا منوا سکیں گے پہلے مرحلے میں سکولوں کے طلباء کے درمیان مختلف گیمز کے علاوہ پینٹنگ ،خطاطی،نعت خوانی ،تقاریر،قرات کے مقابلے منعقد کئے جائیں گے تحصیل باڑہ میں گز شتہ ہفتے ،،خیبر سپر چلینج ،،مقابلے شروع ہو چکے ہیں جبکہ لنڈیکوتل میں گز شتہ روز گورنمنٹ ہائی سکول لنڈیکوتل میں شروع ہو گئے ہیں مقابلوں میں لنڈیکوتل تحصیل کے تمام سرکاری اور پرائیویٹ سکولزکے طلباء نے حصہ لے رہے ہیں جس میں قراء ت ،نعت خوانی ،تقاریر،مضمون نویسی ،خوشخطی ،پینٹنگ ،مزاحیہ خاکے،موسیقی،شاعری،شامل ہیں جبکہ مختلف گیمز فٹ بال ،کرکٹ ،والی بال ،ہاکی رسہ کشی کے علاوہ دوسرے گیمز کے مقابلے منعقد کئے جائیں گے سکولوں اور کالج طلباء کے علاوہ عام لوگ اور کھلاڑی اپنے فن کا مظاہرہ کر سکیں گے جیسے پولیٹکل انتظامیہ سپورٹ کر ینگے لنڈیکوتل میں ،،خیبر سپر چیلنج ،،کا آغازگز شتہ روز گو رنمنٹ ہائی سکول میں ہواجس کا مہمان خصوصی اسسٹنٹ پولیٹکل ایجنٹ لنڈیکوتل رحیم اللہ محسود ،تحصیلدار ارشادخان تھے جبکہ دیگر مہمانوں میں ایجنسی ایجوکیشن افیسر حیدرعلی ،ال ٹیچر ایسوسی ایشن کے صدر غفار خان سکول پرنسپل ڈاکٹر حنیف وزیر ،کے علاوہ مختلف سکولز کے پرنسپلز اور سینکڑوں طلباء نے شرکت کی اس موقع پر اے پی اے رحیم اللہ محسود نے کہا کہ قبائلی طلباء اور کھلاڑیوں میں بے پناہ ٹیلنٹ موجود ہیں لیکن انکو اپنے اپ کو آگے لانے اور لوہا منوانے کیلئے مواقع پیدا کرنے کی ضرورت ہیں جواب پولیٹکل انتظامیہ مکمل تعاون کر یگی اور طلباء کھلاڑیوں کو مکمل سپورٹ کر یگی انہوں نے کہا کہ ،،خیبر سپر چیلنج،، مقابلے تین مہینوں تک جاری رہی گی جس میں ہر تحسیل میں بڑے بڑے مشاعرے بھی منعقد کئے جائیں گے انہوں طلباء پر واضح کر دیا کہ اپنی تمام تر توانائی تعلیم پر خرچ کریں اور نصابی سر گرمیوں کے ساتھ غیر نصابی سرگرمیوں پر توجو دیں انہوں نے کہا کہ طلباء کے درمیان اس طرح کے مقابلے خوش ائند ہیں اور یہ مقابلے پولیٹکل ایجنٹ خیبر ایجنسی خالد محمود کی ذاتی دلچسپی کی وجہ سے منعقد کئے جارہے ہیں تاکہ دنیا کو دنیا کو دیکھا سکے کہ قبائلی پرامن اور اچھے سوچ رکھنے والے لوگ ہیں اور اس کے ساتھ قبائلی کھلاڑیوں کو ملک مختلف ڈیپا رٹمنٹ کھیلنے اور ملک کانام روشن رکھنے کا موقع مل سکے

مزید : پشاورصفحہ آخر


loading...