گھانا کے آکان قبیلے کا بادشاہ کینیڈا میں مالی کا کام کرتا ہے

گھانا کے آکان قبیلے کا بادشاہ کینیڈا میں مالی کا کام کرتا ہے
 گھانا کے آکان قبیلے کا بادشاہ کینیڈا میں مالی کا کام کرتا ہے

  


اوٹاوا (نیوز ڈیسک)دنیا میں اکثر حکمرانوں کے مال و دولت اور جاہ و جلال کا کوئی حد و حساب نہیں لیکن اسی دنیا میں ایک ایسا حکمران بھی موجود ہے جو عوام کی دولت پر عیاشی کرنے کی بجائے ایک مالی کے طور پر کام کرتا ہے اور نہ صرف ایک محنت کش کی زندگی گزار رہا ہے بلکہ اپنی کمائی بھی اپنے عوام پر خرچ کر رہاہے۔خون پسینے کی کمائی سے گزر اوقات کرنے والا یہ حکمران مغربی گھانا کے آکان قبیلے کا بادشاہ ایرک مانو ہے، جو گزشتہ سال اپنی چھوٹی سی افریقی ریاست کا حکمران منتخب ہوا اور اب کینیڈا واپس پہنچ کر دوبارہ وہی کام شروع کردیا ہے جو وہ حکمران بننے سے پہلے کر رہا تھا۔ ایرک مانو جب 2012ء میں کینیڈا آئے تو آکان قبیلے کے حکمران ان کے چچا تھے۔ وہ کینیڈا آکر گزر اوقات کے لئے مالی کا کام کرنے لگے۔ گزشتہ سال انہیں واپس افریقہ بلالیا گیا کیونکہ ان کے چچا کی وفات ہوچکی تھی، اور نئے حکمران کے طور پر ان کا انتخاب کرلیا گیا۔ وہ تخت نشین ہوگئے اور مملکت کا انتظام و انصرام بھی سنبھال لیا، لیکن چند ماہ اپنے ملک میں گزارنے کے بعد وہ دوبارہ کینیڈا آگئے اور اپنی نوکری دوبارہ شروع کردی۔ایرک مانو کہتے ہیں کہ کینیڈا واپس آکر ناصرف وہ خود رقم کمارہے ہیں بلکہ انہوں نے ایک ادارہ قائم کیا ہے جو سارے ملک سے عطیات اکٹھے کرتا ہے۔ وہ یہ ساری رقم اکٹھی کرکے اپنے ملک لیجاتے ہیں تاکہ اپنے پسماندہ عوام کی حالت بہتر کرسکیں۔ ایرک مانو کا کہنا ہے کہ کینیڈا میں کام کرنے کے دوران وہ اپنی مملکت کی بھی ہر لمحہ خبر رکھتے ہیں اور انٹرنیٹ کے ذریعے تمام ضروری معاملات نمٹاتے ہیں۔ یعنی وہ دن بھر مالی کے طور پر کام کرتے ہیں اور شام ڈھلے انٹرنیٹ کے زریعے اپنے ملک کے معاملات سنبھال لیتے ہیں۔ وہ جب بھی اپنے وطن واپس جاتے ہیں تو ناصرف کینیڈا سے اکٹھی کی گئی بھاری رقم ساتھ لے کر جاتے ہیں بلکہ اپنے عوام کے لئے جدید ٹیکنالوجی اور نئی نئی ایجادات کے تحفے بھی لے کر جاتے ہیں۔ شاید یہی وجہ ہے کہ ان کی ریاست کا ہر فرد ان سے محبت کرتا ہے اور ان کی وطن واپسی کا منتظر رہتا ہے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...