فراڈ کیس : برطانیہ کی عدالت نے پاکستانی نژاد برطانوی شہری کو 11سال قید کی سزاسنا دی

فراڈ کیس : برطانیہ کی عدالت نے پاکستانی نژاد برطانوی شہری کو 11سال قید کی ...
فراڈ کیس : برطانیہ کی عدالت نے پاکستانی نژاد برطانوی شہری کو 11سال قید کی سزاسنا دی

  


لندن(عرفان الحق ) برطانیہ کی عدالت نے 11کروڑ 30لاکھ کا فراڈ کرنے والے پاکستانی نژاد برطانوی شہری کوگیارہ سال قید کی سزا سنادی ۔ 

تفصیلات کے مطابق برطانیہ میں مقیم پاکستانی نژاد برطانوی شہری فیضان حمید گیارہ کروڑ 30لاکھ کا فراڈ کر نے والے کو عدالت نے گیارہ سال قید کی سزاءسنا دی ۔ برطانوی پولیس نے ملزم سے 47ملین پاﺅنڈ برآمد کر لیے ۔

روزنامہ پاکستان کی خبریں اپنے ای میل آئی ڈی پر حاصل کرنے اور سبسکرپشن کیلئے یہاں کلک کریں

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم برطانیہ سے فراڈ کر کے پاکستان اور پھر فرانس چلا گیا تھا تاہم گزشتہ برس نومبر میں جعلی پاسپورٹ پر فرانس سے پاکستان جاتے ہوئے اسے گرفتار کر کے برطانیہ کے حوالے کیا گیا تھا۔ فیضان حمید کو گذشتہ روز اس کا جرم ثابت ہونے پر برطانوی عدالت نے گیارہ سال قید کا حکم سنایا ہے۔ فیضان حمید پر الزام ہے کہ اس نے برطانیہ میں اپنا گینگ بنا رکھا تھا جو کہ برطانوی شہریوں کو بینک کا ملازم ظاہر کرکے فون کرتے اور ان سے بینک کی تفصیلات لیکر ان کے اکاو¿نٹس سے پیسے چراتے تھے۔

ملزم فیضان حمیدفراڈ کرنے کے بعد پاکستان بھاگ گیا اور اس نے وہاں لاہور میں عالیشان مکان بنوایا اور پ±ر تعیش زندگی گذارنا شروع کردی جبکہ اس نے کئی مِلن کا جیولری کا کاروبار بھی شروع کردیا۔ اس کے علاوہ فیضان حمید نے بینٹلے اور لیموگرینی گاڑیاں بھی رکھی ہوئی تھیں۔

برطانوی اخباری رپورٹ کے مطابق فیضان حمید نے پاکستانی گلوکار بلال سعید سمیت متعدد گلوکاروں سے بھی ان کی میوزک ویڈیو پرموٹ کرنے کے نام پر بھی فراڈ کیا۔

فیضان حمید عرف فیضی کے گینگ نے برطانیہ میںلوگوں کے پیسے چرائے اور تقریبا سات سو پچاس بینک اکاو¿نٹس سے کئی ملین پاو¿نڈ چرائے گے جسے میٹروپولیٹن پولیس نے برطانیہ کا سب سے بڑا سائبر فراڈ قرار دیا۔

فیضان حمید کاروائی شروع ہوتے ہی برطانوی اداروں کو چکمہ دیکر پاکستان فرار ہو گیا تھا جبکہ اس کے گرفتاری کے وارنٹ گذشتہ سال جاری ہوئے۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

اخباری رپورٹ کے مطابق 2013 اور 2015 کے درمیان فیضان حمید اور اس کے گروپ نے ایک سو تیرہ مِلین کا فراڈ کیا جس میں سے سینتالیس مِلین برآمد کیلئے گے ہیں جبکہ پولیس کا کہنا ہے کہ بقیہ 66 ملین دبئی اور پاکستان میں منتقل کئے گے ہیں۔

لندن کے علاقے لیورپول کی ایک لا فرم کا کہنا ہے کہ ان کے پانچ لاکھ پاونڈ جبکہ ایک دوسری لا فرم کے مطابق چھ لاکھ ستر ہزار چوری ہوئے ہیں۔گلوکیسٹر کی ایک کمپنی کا کہنا ہے کہ اڑھائی گھنٹے میں ان کے اکاو¿نٹس سے دو مِلن چوری کئے گے۔

فیضان حمید نے ان الزامات کی تردید کی ہے کہ لوایڈز بینک کا کوئی ملازم اس کے ساتھ ملا ہوا تھا جو اس کو بینک اکاوئٹس کی تفصیلات مہیا کرتا تھا۔

فیضان حمید کو ساو¿تھ وارک کی کراو¿ن کورٹ نے گذشتہ ماہ گیارہ سال کی سزا سنائی ہے۔

مزید : برطانیہ


loading...