اگر آپ کو بھی چاکلیٹ سے الرجی ہے تو اس کی وجہ انتہائی غلیظ ہے کیونکہ۔۔۔

اگر آپ کو بھی چاکلیٹ سے الرجی ہے تو اس کی وجہ انتہائی غلیظ ہے کیونکہ۔۔۔
اگر آپ کو بھی چاکلیٹ سے الرجی ہے تو اس کی وجہ انتہائی غلیظ ہے کیونکہ۔۔۔

  


لندن(نیوزڈیسک) کچھ لوگ ایسے بھی ہوتے ہیں جنہیں چاکلیٹ سے الرجی ہوتی ہے اور حال ہی میں کی گئی تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ اس کی وجہ ’’کاکروچ‘‘سے الرجی ہے۔امریکی ادارے ایف ڈی اے کا کہنا ہے کہ ایک چاکلیٹ بار میں اوسطاًمکوڑوں کے آٹھ حصے پائے جاتے ہیں۔

ماہرصحت ڈاکٹر مورٹن ایم ٹیک کا کہنا ہے کہ ان حشرات کی ملاوٹ کی وجہ سے لوگوں کو کئی طرح کی الرجیاں اور سانس کی بیماریاں لاحق ہوسکتی ہیں۔اس کا کہنا ہے کہ اس نے جب مریضوں کو اس کے بارے میں بتایا تو کئی لوگوں نے کہا کہ اب وہ کبھی بھی چاکلیٹ نہیں کھائیں گے۔اس کا کہنا ہے کہ نہ صرف چاکلیٹ بلکہ اشیاء جیسے پی نٹ بٹر،میکرونی،پاپ کارن اور پنیر میں بھی اس طرح کی ملاوٹ مل سکتی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ اگر آپ سوچ رہے ہیں کہ چاکلیٹ کا برانڈ تبدیل کرکے محفوظ رہ سکیں گے تو یہ بھی ناممکن ہے۔’’یہ ممکن ہی نہیں کہ چاکلیٹس کی تیاری میں ان حشرات سے بچاجاسکے کیونکہ یہ کھانے پینے کی اشیاء میں اپنی باقیات اورفضلہ چھوڑ جاتے ہیں۔‘‘اس کاکہنا ہے کہ بینز کو پیسنے کے دوران بھی کئی حشرات اس میں شامل ہوجاتے ہیں اور ہم لوگ بخوشی اسے کھاجاتے ہیں۔

مزید : تعلیم و صحت


loading...