خاتون کے ساتھ چلتی ٹرین میں دو مردوں نے گِری ہوئی حرکت ، خاتون نے ایسا کام کردیا کہ ان مَردوں کو دنیا میں کہیں منہ دکھانے کے لائق نہ چھوڑا

خاتون کے ساتھ چلتی ٹرین میں دو مردوں نے گِری ہوئی حرکت ، خاتون نے ایسا کام ...
خاتون کے ساتھ چلتی ٹرین میں دو مردوں نے گِری ہوئی حرکت ، خاتون نے ایسا کام کردیا کہ ان مَردوں کو دنیا میں کہیں منہ دکھانے کے لائق نہ چھوڑا

  


لندن (نیوز ڈیسک) دوران سفرکسی معذور یا بزرگ کو دیکھ کر عموماً لوگ خودہی ان کے لئے سیٹ خالی کردیتے ہیں مگر ان بے حس مردوں کو دیکھئے کہ ایک معذور خاتون کی بک کروائی گئی سیٹوں پر قبضہ جما کر بیٹھ گئے اور اسکی بار بار کی درخواست پر بھی سیٹ چھوڑنے پر آمادہ نہ ہوئے۔ بیچاری معذور خاتون اور تو کچھ نہ کرسکیں البتہ انہوں نے ان بے حس مسافروں کی تصویر بنا کر فیس بک پر شیئر کردی اور ساتھ مختصر الفاظ میں ان کا ایسا تعارف بھی پیش کر دیا کہ ساری دنیا کے سامنے انہیں ذلیل و رسوا کر کے رکھ دیا۔

یہ خاتون 12 روز تک صرف کیلے کھاتی رہی، نتیجہ کیا نکلا؟ جان کر آپ حیرت کے سمندر میں ڈوب جائیں گے

کیٹ لی نامی خاتون کا کہنا ہے کہ وہ معذور ہیں اور اکثر شدید تکلیف میں مبتلا رہتی ہیں۔ انہیں لندن کے کنگز کراس سے سکپٹن سٹیشن تک جانا تھا جس کے لئے انہوں نے اپنی مددگار ساتھی اور اپنے لئے دو سیٹیں بک کروائیں۔ جب وہ کنگز کراس سٹیشن پر گاڑی میں سوار ہوئیں تو دیکھا کہ ان کی ریزرو کروائی گئی سیٹوں پر دو مرد بیٹھے ہوئے تھے۔ انہوں نے بارہا درخواست کی کہ وہ معذور ہونے کی وجہ سے ان ریزرو سیٹوں کی شدید ضرورت مند ہیں لیکن ہٹے کٹے مرد مسافروں نے ان کی ایک نہ سنی۔ کیٹ لی نے ان کی تصویر بنا لی اور فیس بک پر شیئر کر دی، جس کے ساتھ لکھا ”ان صاحبوں سے ملیے، لندن کے کنگز کراس سے سکپٹن سفر کے لئے میں نے دو سیٹیں بک کروائیں جن پر انہوں نے قبضہ کرلیا۔ ایک معذور مسافر کے طور پر میں نے ان کے سامنے وضاحت کی کہ مجھے ریزرو سیٹوں کی کیوں ضرورت ہے، لیکن یہ ذرا بھی نہیں ہلے۔ مجھے یقین ہے کہ ان کی مائیں اور بیگمات ان کے اس فعل پر بہت فخر کریں گی۔“

کیٹ لی کی پوسٹ سوشل میڈیا پر عام ہونے کے بعد ان کی سیٹ پر قبضہ کرنے والے مسافروں میں سے ایک نے میل آن لائن کے ساتھ رابطہ کیا اور اپنی صفائی پیش کرتے ہوئے کہنے لگا” خاتون نے یہ ضرور کہا تھا کہ وہ شدید درد میں مبتلا ہیں مگر انہوں نے یہ تو نہیں بتایا تھا کہ وہ معذور ہیں۔“ اس شخص کا یہ بھی کہنا تھا کہ ریل گاڑی میں ایک اعلان کیا گیا تھا جس میں بتایا گیا تھا کہ تمام ریزرویشن کینسل کی جاچکی ہیں، لہٰذا ہم پر کوئی ذمہ داری نہیں تھی کہ ان کے لئے سیٹ خالی کرتے۔

اس شخص کی باتوں سے ظاہر تھا کہ اسے انٹرنیٹ پر اپنی بے عزتی کا خاصا دکھ تھا،البتہ افسوسناک بات یہ ہے کہ اس کے باوجود اس بات پر پچھتاوا نہیں تھا کہ شدید درد میں مبتلا ایک معذور خاتون کے لئے انہوں نے سیٹ خالی نہیں کی تھی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...