’’کتا مار مہم‘‘ تو سنا تھا لیکن ’’ کتا پکڑو مہم‘‘ پہلی بار سن رہے ہیں،مراد علی شاہ پہلے اپنی کابینہ سے کچرہ صاف کریں:حلیم عادل شیخ

’’کتا مار مہم‘‘ تو سنا تھا لیکن ’’ کتا پکڑو مہم‘‘ پہلی بار سن رہے ...
’’کتا مار مہم‘‘ تو سنا تھا لیکن ’’ کتا پکڑو مہم‘‘ پہلی بار سن رہے ہیں،مراد علی شاہ پہلے اپنی کابینہ سے کچرہ صاف کریں:حلیم عادل شیخ

  


کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان  تحریک انصاف سندھ کے صدر اور رکن صوبائی اسمبلی حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ  ’’کتا مار مہم‘‘ تو سنا تھا لیکن ’’ کتا پکڑو مہم‘‘ پہلی بار سن رہے ہیں،سندھ حکومت نے ’’کتا پکڑو مہم‘‘ شروع کردی ہے، پہلے بلیو جیکٹ پہن کر ڈراما کیا گیا،اب یہ  کل سے ریڈ ٹی شرٹ پہن کر نکلے ہیں،بلاول زرداری پہلے اپنے گھر کو صاف کریں،جس صوبے میں لاش گھر تک لے جانے کے لئے ایمبولنس نہیں ملتی وہاں کرپشن کے لئے اربوں روپے جاری کئے جاتے ہیں۔

انصاف ہاؤس میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے حلیم عادل شیخ کا کہنا تھا کہ لگتا ہے کہ وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ کشمیر فتح کرنے نکلے ہیں،کہتے ہیں جو کچرا پھینکے گا اس کو گرفتار کیا جائے گا،11سالوں سے کچرہ اٹھانا کس کی ذمہ داری تھی؟آپ نےپورے سندھ کو کچرستان بنا دیا ہے،کراچی روشنیوں کو شہر تھا لیکن آپ نے اسے کچرے کا شہر بنا دیا ہے،شہر کو صاف رکھنا  آپ کی ذمہ داری تھی لیکن  آپ نے گیارہ سالوں میں کچھ نہیں کیا۔انہوں نے کہا  کہفنڈز کا اجراء کیا گیا ہے،یہ عوام کا پیسہ ہے ،کلیئر کراچی میں مراد علی شاہ عوام کو بتائیں کہ اس مہم کے لئے کتنا بجٹ رکھا گیا ہے؟جس صوبے میں ایمبولنس کی جگہ لاشیں تھرمو پول کی شیٹ پر گھر پہنچائی جاتی ہوں؟جس صوبے میں لاش گھر تک لے جانے کے لئے ایمبولنس نہ ملتی ہو  وہاں کرپشن کے لئے اربوں روپے جاری کئے جاتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ لیاقت قائم خانی نے باغات اجاڑ کر گھر بنائے، شرجیل میمن نے کرپشن کر کے بم پروف گھر بنائے، ڈمی اخبارات کو  پیسے دیکر کرپشن کی جاتی رہی، مراد علی شاہ پہلے اپنی کیبنٹ کا کچرہ صاف کریں،جہاں شرجیل میمن جیسا بندہ وزیر اعلیٰ کا ترجمان ہو  وہاں کام کیسے ہوسکتا ہے؟  ہارٹیکلچر سوسائٹی میں کرپشن ہوئی اس میں مرتضیٰ وھاب کی دستخط ہیں، مرتضیٰ وہاب نے بھی ’ہاتھ صاف‘ کیا، وہ وزارت اور مشیر ہونے کے اہل نہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی ٹھٹھہ شوگر مل کیس میں ٹانگیں پھنسی ہوئی ہیں۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی


loading...