پاک فوج کو بد نام کرنا بھارتی سازش، مسلم لیگ ن نے پھر انڈین ایجنڈے کو فروغ دیا: عمران خان 

    پاک فوج کو بد نام کرنا بھارتی سازش، مسلم لیگ ن نے پھر انڈین ایجنڈے کو فروغ ...

  

  اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کے اجلاس سے پہلے پاک فوج کو بدنام کرنا بھارتی سازش کا حصہ ہے اور ن لیگ نے ایک بار پھر بھارت کے ایجنڈے کو فروغ دیا ہے۔  وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت پارٹی اور حکومتی ترجمانوں کا اجلاس ہوا۔ اجلاس میں حکومت نے اپوزیشن کی قرارداد پر بھرپور جواب دینے کا فیصلہ کیا ہے،وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ اے پی سی میں بیٹھے چہروں اور ان کے ذاتی مقاصد سے قوم آگاہ ہے،  پہلے ہی بتا دیا تھا یہ سارے اپنے مفادات کی خاطر اکٹھے ہوجائیں گے، اپوزیشن کی اے پی سی ریاستی اداروں کو بدنام کرنے کی کوشش تھی، اپوزیشن کی اداروں پر تنقید اپنی کرپشن سے توجہ ہٹانے کی کوشش ہے، ملک کے تمام ادارے اپنی حدود میں رہ کر کام رہے ہیں۔وزیراعظم نے کہا کہ بیرون ملک ایک پوری لابی پاک فوج کے خلاف سرگرم عمل ہے، بھارت پاکستانی اداروں اور ملک میں عدم استحکام سمیت جنرل اسمبلی اجلاس سے قبل دنیا کی توجہ کشمیرسے ہٹانا چاہتا ہے،  اقوام متحدہ اجلاس سے پہلے پاک فوج کو بدنام کرنا بھارتی سازش کا حصہ ہے، (ن) لیگ نے بھی ایک بار پھر بھارتی ایجنڈے کو فروغ دیا، اور ایک بار پھرلندن میں بیٹھا مفرور شخص ملکی اداروں کو بدنام کر رہا ہے، نواز شریف کی تقریر اور ٹائمز آف انڈیا میں چھپی خبر ایک ایجنڈے کی عکاس ہے، ان کی تقریر کے بعد پاکستانی اداروں کے خلاف بھارتی میڈیا زہر اگل رہا ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کی مسلح افواج قومی سلامتی کی ضامن ہین، ملک پر جب بھی کوئی آفت آئی فوج نے اپنی قوم کا ساتھ دیا،فوج قوم کے ساتھ ہم آواز ہوکر ملک کی خدمت کر رہی ہے، لیبیا،عراق،شام جیسے ممالک کمزورفوج کے باعث تباہ ہوئے، ہم ملکی اداروں کو بدنام کرنے کی سازش ناکام بنائیں گے، اور عدالتوں اور فوج کو بدنام نہیں ہونے دیں گے۔وزیراعظم عمران خان سے    چینی سفیر یاوجنگ   نے الوداعی ملاقات   کی ۔وزیراعظم نے پاک چین تعلقات کی بہتری میں چینی سفیر کے کردار کو سراہا۔وزیر اعظم کا کہناتھاکہ پاکستانی عوام چینی صدر کے دورہ پاکستان کے منتظر ہیں۔وزیراعظم نے چینی قیادت کے اپنی عوام کے لیے خدمات کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ  چین کی سماجی و معاشی ترقی میں چینی قیادت کا اہم کردار ہے۔غربت کے خاتمے اور معاشی ترقی کے لیے بیجنگ سے سیکھا جاسکتا ہے۔وزیراعظم نے کہا ہے کہ سفیر یاو جنگ کے دور میں سی پیک دوسرے مرحلے میں داخل ہوگیا ہے،جس میں صنعت،زراعت اور سماجی واقتصادی ترقی پر توجہ مرکوز ہے اور علاقائی پیداوار و خوشحالی میں اہم کردار ادا کرے گی۔چینی سفیر نے پاک چین تعلقات کو مزید مضبوط اور گہرہ بنانے میں وزیراعظم عمران خان کے قائدانہ کردار کو سراہا،جسے چینی قیادت اعلیٰ سطح پر قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔انہوں نے کہا کہ کووڈ 19کے خاتمے کیلئے پاکستان کی سمارٹ لاک ڈاؤن کی پالیسی کا عالمی سطح پر اعتراف کیا گیا ہے اور وباء کے ممکنہ طورپر دوسرے مرحلے سے نمٹنے کیلئے دوسرے ممالک کو اسے ماڈل کے طور پر اپنانا چاہئے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان سے وہ بے شمار یادیں لے کر جارہے ہیں اور پاک چین تعلقات کی مزید مضبوطی کے خواہاں ہیں۔چین پاکستان کی قومی ترقی اور مقاصد کے حصول میں مدد جاری رکھے گا۔

عمران خان

مزید :

صفحہ اول -