پشاور اور صوبے کے دیگر اضلاع میں 5روز ہ پولیو مہم کا آغاز 

پشاور اور صوبے کے دیگر اضلاع میں 5روز ہ پولیو مہم کا آغاز 

  

پشاور،اضلاع (سٹی رپورٹر،نمائندگان پاکستان)صوبہ کے دیگر اضلاع کی طرح پشاور میں بھی آج سے پانچ روزہ پولیو مہم کا آغاز ہو چکا ہے اس ضمن میں کیپٹل سٹی پولیس کی جانب سے سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے ہیں، پولیو مہم کی خاطر پشاور پولیس کی جانب سے خصوصی سکیورٹی پلان ترتیب دیا گیا ہے، سکیورٹی پلان کے مطابق چار ہزار سے زائد پولیس اہلکار سکیورٹی کے فرائض سر انجام دے رہے ہیں سی سی پی او محمد علی گنڈا پورتفصیلات کے مطابق صوبائی دارالحکومت پشاور میں صو بہ کے دیگر اضلاع کی طرح آج سے پانچ روزہ پولیو مہم کا آغاز ہو چکا ہے اس ضمن میں کیپٹل سٹی پولیس پشاور کی جانب سے سکیورٹی کے سخت ترین انتظامات کئے گئے ہیں، پولیو مہم کی کامیابی کی خاطر پشاور پولیس کی جانب سے خصوصی سکیورٹی پلان ترتیب دیا گیا ہے، سکیورٹی پلان کے مطابق چار ہزار سے زائد پولیس اہلکار سکیورٹی کے فرائض سر انجام دے رہے ہیں، اسی طرح شہر کے تمام داخلی خارجی راستوں کی کڑی نگرانی کی جا رہی ہے، پولیو ٹیموں کی سکیورٹی کے لئے پولیس ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں اس ضمن میں پولیس افسران نے اہلکاروں کو خصوصی ہدایات بھی جاری کی ہے جبکہ شہر کی سکیورٹی ہائی الرٹ کر دی گئی ہے پولیو مہم کے دوران امن و امان کو برقرار رکھنے کی خاطر تمام وسائل کو بروئے کار لایا جا رہا ہے اور سکیورٹی کے لحاظ سے شہر کو چار سکیٹرز میں تقسیم کیاگیا ٭صوبے کے دوسرے اضلاع کی طرح سوات میں بھی بچوں کو پولیوکے قطرے پلانے کی پانچ روزہ مہم کا آغاز ہوا اس موقع پر افتتاحی تقریب گلکدہ سیدوشریف سوات میں منعقد ہوئی تقریب میں ممبر قومی اسمبلی و پارلیمانی سیکرٹری سلیم الرحمان، ممبر صوبائی اسمبلی و ڈیڈیک چیئرمین فضل حکیم خان یوسفزئی، ڈپٹی کمشنر سوات ثاقب رضا اسلم، ڈی ایچ او سوات محمد اکرم شاہ، پولیو کے ضلعی سربراہ سمیت ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت کے افسران اور اہل کاروں نے شرکت کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہا کہ ہم مشترکہ طور پر اس پولیو مہم کیلئے کردار ادا کررہے ہیں تاکہ ہر پانچ سال کی عمر تک کے بچے کو دو دو قطرے پولیو ویکسین پلانے کے عمل کو 100 فیصد یقینی بنائیں انہوں نے کہا کہ ضلع سوات میں کسی بھی بچے کو پولیو ویکسین سے محروم نہ رکھا جائے گا تمام افسران اور اہلکار انتہائی ایمانداری اور دیانتداری سے اپنے فرائض سر انجام دے رہے ہیں انہوں نے کہا کہ ضلع سوات کے تمام یونین کونسلوں میں پانچ روزہ انسداد پولیو مہم کیلئے تمام انتظامات مکمل کر لئے گئے ہیں سوات میں مہم کے دوران مجموعی طور پر 4لاکھ 81 ہزار بچوں کو گھر گھر جاکر پولیو قطرے پلائے جائیں گے مہم کے لیے367 ایریا انچارج اور 83یونین کونسل میڈیکل آفیسرزکے زیرِ نگرانی 1722ٹیمیں تشکیل دی جاچکی ہیں عوامی نمائندوں نے 5 سال سے کم عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے پلاکر مہم کا باقاعدہ افتتاح کیا٭ ملک کے دیگر حصو ں کی طر ح بروز پیر21ستمبر کو ضلع ایبٹ آباد میں بھی انسداد پو لیو مہم کا آغازہو چکا ہے جس میں ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت کی ٹیمز گھر گھر جا کر بچوں کو پولیو سے بچا ؤکے قطرے پلائیں گئیں۔حکومت خیبر پختونخوا کے احکامات کی روشنی میں 21 ستمبر تا 25 ستمبر 2020، پولیو مہم کا انعقاد کیا جا رہا ہے جس میں ضلع ایبٹ آبادکے05 سال تک کی عمر کے 02 لاکھ سولہ ہزار تین سو پچاسی بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائیں گے۔ ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ایبٹ آباد ڈاکٹر شاہ فیصل خانزادہ  نے کہا کہ اس موقع پرشہریوں کا اپنے بچوں کو قطرے پلانا نہایت ضروری ہے۔ اس لئے پو لیو ٹیمو ں سے تعاون کر تے ہو ئے  05 سال تک کی عمر تک کے بچو ں کو پو لیو کے قطرے پلانے میں ضلعی انتظامیہ اور محکمہ صحت کا ساتھ دیں۔یہ با تیں پیر کے روز ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفیسر ایبٹ آباد ڈاکٹر شاہ فیصل خانزادہ نے پو لیو مہم کے پہلے روز گھر گھر جا کر پولیو ٹیموں کی حوصلہ افزائی، بچوں کی مارکنگ کی چیکنگ اور والدین کو پولیو جیسے موذی مرض سے آگاہ کرتے ہو ئے بتا ئیں ٭کمشنر بنوں ڈویژن شوکت علی یوسفزئی نے چھوٹے بچوں کو پولیو کے قطرے پلاکر 5روزہ قومی پولیو مہم کا افتتاح کیا۔ پانچ روزہ قومی پولیو مہم کے دوران ضلع بنوں میں 57یونین یونسلزمیں 210025پانچ سال یا پانچ سال سے کم عمر کے بچوں کو پولیو کے قطرے پلائے جائینگے۔ مہم کے دوران 987موبائیل ٹیمیں اور67فکسڈ ٹیمیں حصہ لے رہے ہیں۔ ڈسٹرکٹ پولیو کنٹرول روم کی طرف سے 22ٹیمیں اس مہم کی کڑی نگرانی کرینگے جبکہ NEOCسے ایک جبکہ PEOCسے تین ماہرین پر مشتمل وفد مہم میں خصوصی معاونت فراہم کرینگے۔ اس موقع پر کمشنر نے کہا کہ پولیو جیسے موذی اور جان لیوا وائرس کے تدارک کیلئے تمام وسائل کا استعمال یقینی بنا یا جائے گا اور اس ضمن تمام انتظامات مکمل ہیں۔کمشنر نے کہا کہ پروپیگنڈوں کے ذریعے لوگوں کے ذہنوں میں پولیو مخالف جذبات کی بیخ کنی کیلئے تمام مکتبہ فکر کے لوگوں کو کردار ادا کرنا چاہیے اور اس سلسلے میں ریاستی ترجیحات کو فوقیت دینی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ اپنے بچوں کی صحت اور بہتر نگہداشت تمام والدین کا اولین فرض ہے اور اس فرض کی انجام دہی میں لوگوں کے جھوٹ پر مبنی پروپیگنڈوں میں کسی قسم کی لاپرواہی نہیں ہونی چاہیے ورنہ خدانخواستہ عمر بھر اپنے بچوں کی معذوری کا سامنا کرنا پڑے گا۔ کمشنر نے مزید کہا کہ پولیو وائرس کے مکمل خاتمے تک جدوجہد جاری رہے گی اور اپنے مستقبل کے نونہالوں کو ہر صورت اس بیماری سے بچانے کی بھر پورکوشش کرینگے۔ 

مزید :

صفحہ اول -