آئی جی پنجاب کو زمینوں پر قبضہ میں ملوث پولیس افسروں کیخلاف کارروائی کا حکم

آئی جی پنجاب کو زمینوں پر قبضہ میں ملوث پولیس افسروں کیخلاف کارروائی کا حکم

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس محمدقاسم خان نے آئی جی پنجاب پولیس کو زمینوں پر قبضہ میں ملوث ڈی پی او ز اورایس ایچ اوزسمیت(بقیہ نمبر12صفحہ 6پر)

 پولیس افسروں کے خلاف کارروائی کاحکم دیتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی فاضل جج نے یہ حکم حافظ آباد کے شہری جاوید اقبال کی درخواست پر جاری کیا فاضل جج نے کیس کی سماعت کے دوران ریمارکس دیئے کہ پولیس والے لڑائی جھگڑے یا قانونی پیچیدگیوں والی زمینوں کوخریدلیتے ہیں، دس پندرہ کروڑ روپے اکٹھے کر کے کہتے ہیں ایمانداری سے نوکری کرتے رہے ہیں،پولیس شہریوں کی زمینوں پر قبضے شروع کر دے تو عام آدمی کا کیا حال ہوگا؟ پولیس کے متعلق اس طرح کی شکایات موصول ہو رہی ہیں، اس سے قبل ڈی پی او نارووال کی بھی اسی طرح کی شکایت موصول ہوئی تھی، پہلے بڑے پولیس افسرایسا کام کرتے تھے اب ایس ایچ اوز نے بھی یہ کام شروع کر رکھا ہے،آئی جی پنجاب ایسے تمام افسران کی رپورٹ لیں اور قانون کے مطابق کارروائی کریں،اگر پولیس اس طرح کی حرکتیں کرے گی تو لوگ کہاں جائیں گے، درخواست گزار شہری کا موقف ہے کہ وہ پراپرٹی کاکام کرتاہے،ایس ایچ او پنڈی بھٹیاں پلاٹ حاصل کرنے کے لئے دباؤ ڈال رہا ہے، ایس ایچ او پلاٹ یا ایک لاکھ روپے نہ دینے پر منشیات کیس میں گرفتار کرنے کی دھمکی دے رہا ہے، متعلقہ ایس ایچ او کو ہدایت کی جائے کہ درخواست گزار کو ہراساں نہ کرے۔

کارروائی کا حکم 

مزید :

ملتان صفحہ آخر -