پہلو میں دل ہے دل میں تمنائے یار ہے | بیدم شاہ وارثی |

پہلو میں دل ہے دل میں تمنائے یار ہے | بیدم شاہ وارثی |
پہلو میں دل ہے دل میں تمنائے یار ہے | بیدم شاہ وارثی |

  

پہلو میں دل ہے دل میں تمنائے یار ہے

آئینہ ہے جہاں وہیں آئینہ دار ہے 

چکر میں ہے سوار جو اس پر سوار ہے

کیا تیزگام ابلقِ لیل و نہار ہے

آہٹ پہ کان در پہ نظر بار بار ہے

کچھ خیر تو ہے کس کا تمہیں انتظار ہے

اک میں کہ مجھ سے سارے زمانے کو اختلاف

اک تم کہ تم پہ ساری خدائی نثار ہے

تم شوق سے جفا کئے جاؤ ستم کرو

یہ کس نے کہہ دیا کہ مجھے ناگوار ہے

یُوں جا رہا ہوں داوَرِ محشر کے سامنے

سینہ پہ ہاتھ، ہاتھ میں تصویرِِ  یار ہے

دامن کسی کا چھوتے ہی معراج ہو گئی

مشتِ غبار دوشِ ہوا پر سوار ہے

جھگڑا چکائیں جان ہی دیدیں فراق میں

ہونا تو ایک دن یہی انجامِ کار ہے

کس کو سنا رہی ہے صبا مژدہ بہار

ہم کیا کریں جو آمدِ فصلِ بہار ہے

نیرنگِ روزگار پہ کس کی نظر نہیں

ہر آنکھ اک مرقعِ لیل و نہار ہے

بیدم ملے جو مجمعِ احبابِ دلنواز

پھر تو خزاں بھی ہو تو ہماری بہار ہے

شاعر: بیدم شاہ وارثی

(دیوانِ بیدم: سالِ اشاعت،1935)

Pehlu   Men   Dil   Hay  Dil   Men   Tamanaa-e-Yaar   Hay

Aaina   Hay    Jahaan    Wahen   Aaina   Daaar   Hay

 Chakkar   Men   Hay    Sawaar   Jo   Iss   Par   Sawaar   Hay

Kaya   Taiz   Gaam    Ablaq-e- Lail -o- Nahaar   Hay

Aahat   Pe   Kaan   Dar   Pe   Nazar   Baar   Baar   Hay

Kuchh   Khair    To   Hay   Kiss   Ka   Tumhen   Intezaar   Hay

Ik   Main   Keh   Mujh   Say   Saaray   Zamaanay   Ko   Ikhtalaaf

Ik   Tum   Keh  Tum   Pe   Saari   Khudaai   Nisaar   Hay

Tum   Shoq   Say   Jafaa   Kiay   Jaao   Sitam   Karo

Yeh   Kiss   Nay   Keh   Diya   Keh   Mujhay   Nagawaar   Hay

Yun   Ja   Raha   Hay   Daawar -e- Mehshar   K  Saamnay

Seena   Pe   Haath   Haath   Men   Tasveer -e- Yaar   Hay

Daaman   Kisi   Ka   Chhootay   Hi   Meraaj   Ho   Gai

Masht -e -Ghubaar    Dosh-e- Hawaa    Par    Sawaar   Hay

Jhagrraa   Chukaaen   Jaan   Hi   Day   Den    Firaaq  Men

Hona   To   Aik   Din    Yahi    Anjaam -e- Kar   Hay

Kiss   Ko   Suna   Rahi   Hay   Sabaa    Muzzda-e-Bahaar

Ham   Kaya   Karen   Jo   Aamad -e- Fasl-e- Bahaar   Hay

Nayrang-e- Rozgaar   Pe   Kiss   Ki   Nazar   Nahen

Har    Aankh   Ik    Muraqqa -e- Lail-o- Nahaar   Hay

BEDAM    Milay   Jo   Majma-e- Ahbaab -e-Dilnawaaz

Phir   To   Khizaan   Bhi   Ho   To    Hamaari   Bahaar   Hay

Poet: Bedam   Shah Warsi

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -سنجیدہ شاعری -