بیانیوں کے تضاد پر توجہ دینے کی ضرورت نہیں، اگلا الیکشن ہمارا ہے، مضبوطی اور اتحاد سے انتخاب لڑنا ہوگا: مریم نواز

      بیانیوں کے تضاد پر توجہ دینے کی ضرورت نہیں، اگلا الیکشن ہمارا ہے، ...

  

 لاہور(جنرل رپورٹر)مسلم لیگ ن پنجاب کے زیر اہتمام ملتان ڈویژن کی میٹنگ قائد مسلم لیگ میاں محمد نواز شریف کی زیر صدارت ہوا۔اجلاس میں مسلم لیگ(ن) پنجا ب کے صدر رانا ثنا اللہ،مریم نواز،حمزہ شہباز شریف،اویس لغاری،عظمی بخاری،ذیشان رفیق،عبد الرحمن کانجو،نزہت صادق،ایم این ایز،ایم پی ایز اور پارٹی عہدیدار موجود تھے۔اجلاس کے آغاز میں سیکرٹری جنرل پنجاب اویس لغاری نے تنظیمی امور پر بریفنگ دی۔مسلم لیگ(ن) کے قائد میاں نوازشریف کا اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہمارے ملک میں آئین کی پاسداری ہے نہ پارلیمنٹ کی عزت ہے۔ہمارے درمیان بہت سے لوگ بیٹھے ہیں جو عوام کے ووٹ سے منتخب ہوئے ہیں۔لیکن ان کو ایک منٹ میں فارغ کردیا جاتا ہے۔تین مرتبہ کے منتخب وزیر اعظم کو گھر بھیج دیا جاتا ہے۔وزیراعظم کو اقامے یا بھینس چوری کے مقدمے میں گھر بھیج دیا جاتا ہے۔منتخب وزیر اعظم کو پھانسیاں دی جاتی ہیں۔آج ہم من حیث القوم کہاں کھڑے ہیں۔کوئی ان سے پوچھے آٹا،چینی،ادویات کیوں مہنگی ہیں۔عوام ان حکمرانوں کی جان کو رو رہے ہیں۔ہم نے جتنی بھی موٹرویز بنائی آئی ایم ایف سے قرض لے کر نہیں بنائی۔ان کی حرکتوں کے بعددنیا ہمارے ملک کی عزت کیوں کرے گی۔کیا یہ لوگ اپنے باپ دادا کی سطح کا حساب دے سکتے ہیں؟۔ہم سب پی ڈی ایم کے ساتھ ملکر جدوجہد کرینگے۔اگر ملک کو شفاف الیکشن ملتے تو تحریک انصاف کی شکل میں قوم کو عذاب نہ بھگتنا پڑتا۔ڈلیور بھی ہم نے کیا اور مقدمات بھی ہم پر بنائے گئے۔میرے دور میں جو بھی تحفہ ملتا اس کا اندراج ہوتا اور جمع کرایا جاتا تھا۔جب ان سے تحفوں کے بارے میں پوچھا جاتا ہے تو کہتے یہ ملکی وقار کیخلاف سازش ہے۔اور ہم پر اس بنیاد پر مقدمات بنائے جاتے ہیں۔مسلم لیگ(ن) کے نائب صدر حمزہ شہباز نے اجلاس سے خطاب کرتے کہانا اہل حکومت نے ہر پارٹی لیڈر اور کارکن کیخلاف مقدمہ درج کیا۔اس حکومت نے ہر حربہ استعمال کرکے دیکھ لیا۔لیکن ان کے تمام حربے بری طرح ناکام رہے ہیں۔حکومت کوئی بھی الزام ثابت نہیں کرسکی۔میاں نوازشریف اور میاں شہبازشریف کو اپنے والد،والدہ کو دفنانے نہیں دیاگیا۔میاں نوازشریف کو اپنی بیگم کو آخری لمحات میں ساتھ ہونے کا موقع نہیں ملا۔میاں نوازشریف کا آخری وقت میں اپنی بیگم کے ساتھ نہ ہونے کے غم کا اندازہ نہیں لگایا جاسکتا۔اللہ تعالیٰ نے جس طرح ہمیں کنٹورنمنٹ بورڈز کے الیکشن میں کامیابی دی اسی طرح تھوڑی سے محنت سے جنرل الیکشن میں بھی بڑی کامیابی حاصل کر سکتے ہیں۔آئندہ آنے والے الیکشن میں ہمیں اپنے ووٹ پر پہرہ دینا ہوگا۔تاکہ دھاندلی کی کوئی گنجائش نہ رہے۔مسلم لیگ(ن) کی نائب صدر مریم نواز نے پارٹی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے کہا ہے کہ ہمیں بیانیوں کے تضاد کا شکار نہیں ہونا چاہیے اور نہ ہی اس پر توجہ دینی چاہیے۔ اگلا الیکشن ہمارا ہے، اس لیے ہمیں مضبوطی اور اتحاد سے الیکشن لڑنا ہو گا، اگر ہمارا بیانیہ ہمارے پاس نہ ہوتا تو ہم میں اور دوسری جماعتوں میں کوئی فرق نہ ہوتا۔جب ہر طرف ہر لیڈر کو جبر اور ظلم کا سامنا ہے اسکے باوجود کنٹورنمنٹ بورڈ میں شاندارکامیابی ملی۔مسلم لیگ(ن) کتنی بڑی طاقت ہے اس کا اندازہ اس کے دشمنوں اور حکومت کو بخوبی ہے لیکن خود مسلم لیگ(ن) کو نہیں ہے۔اس لیے آج بھی ان کو مسلم لیگ(ن) کو ہرانے کیلئے دھاندلی اور ووٹ چوری کرنا پڑتے ہیں۔پاکستان کا مستقبل کوئی ہے تو وہ مسلم لیگ(ن)ہے۔کسی جماعت کے پاس ہمارے جیسا لیڈر ہے نہ ہمارے جیسا ووٹ بینک ہے۔باقی جماعتوں کے سربراہ کارکنوں سے قربانی مانگتے ہیں۔ہمارے لیڈر نے خود قربانی دی ہے۔ہمیں بیانیوں کے تضاد کا شکار نہیں ہونا چاہیے اور اس پر نا اس پہ توجہ دینی چاہیے۔لوگ کہہ رہے ہیں یہ دھاندلی کرکے دوبارہ آنا چاہتے ہیں۔انہوں نے مزید کہالیکن میں ان کو بتا دوں اب دوبارہ ووٹ چوری کرنا ممکن نہیں ہے۔پورے ملک میں ووٹ کو عزت کا بیانیہ چل رہا ہے۔آج ہر ادارہ اپنی بقاء کی جنگ لڑ رہا ہے۔آج کرم ایجنسی کی رپورٹ پی ٹی آئی کی حکومت کے منہ پر تماچہ ہے۔ان کے پول کھل رہے ہیں اس لیے الیکشن کمیشن پر حملہ آور ہیں۔اگر ہمیں تھوڑی سے کمزوری دیکھائی تو یہ ہم پر چڑھ دوڑیں گے۔اس لیے ہمیں مضبوط ہونا پڑے گا۔اگلا الیکشن ہمارا اس لیے ہمیں مضبوطی اور اتحاد سے الیکشن لڑنا ہوگا۔اگر ہمارا بیانہ ہمارے پاس نہ ہوتا تو ہم میں اور دوسری جماعتوں میں کوئی فرق نہ ہوتا۔ہمارا بیانہ ہی ہماری پہچان ہے۔مسلم لیگ(ن) پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ نے کہا مسلم لیگ(ن) جلد از جلد اپنی تنظیم سازی مکمل کرنے کی کوشش کررہی ہے۔مسلم لیگ(ن) کو منظم سیاسی قوت بنارہے ہیں۔مسلم لیگ(ن) ایک بڑی جماعت ہے اور ہم نے ہر الیکشن میں یہ ثابت کرکے دیکھایا۔ہمارا لیڈر قوم کا محبوب ترین لیڈر ہے۔ہمیں اپنی طاقت کا درست استعمال کرنا آنا چاہیے۔پاکستانی قوم کو تین مرتبہ اپنی منزل پر پہنچنے سے روک لیا گیا۔قائداعظم نے پاکستان ووٹ کی طاقت سے حاصل کیا۔قائداعظم کو وقت نہیں ملا کہ وہ پاکستان کو آئین دے سکتے۔دوسری بار میاں نوازشریف نے پاکستان کو ایٹمی قوت بنایا۔تیسری بار میاں نوازشریف نے 5.8فیصد ترقی کی شرح دے کر پاکستان کی ترقی کی راہ پر ڈال دیا تھا۔2017میں پاکستان کی ترقی کا سفر ایک بار پھر روک دیا گیا۔ہمارا شاندار ماضی ہماری گواہی دیتا ہے انشاء اللہ ہمارا مستقبل بھی روشن ہے۔وزیراعظم ہاؤس کا خرچہ بڑھ گیا ہے لیکن قوم کو کفایت شعاری کا درس دیا جاتا ہے۔

مریم نواز

مزید :

صفحہ اول -