جسٹس منصور علیشاہ کی تھرکول پاور پروجیکٹ ملازمین کاکیس سننے سے معذرت 

جسٹس منصور علیشاہ کی تھرکول پاور پروجیکٹ ملازمین کاکیس سننے سے معذرت 

  

اسلام آباد(آن لائن)سپریم کورٹ کے جسٹس منصور علی شاہ نے تھرکول پاور پروجیکٹ ملازمین کا کیس سننے سے معذرت کر لی ہے۔ عدالت عظمیٰ نے نئے  بینچ کی تشکیل کے لئے معاملہ چیف جسٹس کو بھجوا دیا ہے۔تھرکول پاور پروجیکٹ کے ملازمین کی جانب سے ڈاکٹر ثمر مبارک مند کے خلاف دائر توہین عدالت کی درخواست پر سماعت جسٹس عمر عطاء بندیال کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کی۔دوران سماعت جسٹس عمر عطاء  بندیال نے پوچھا کہ کیا تھر کول پاور پروجیکٹ سائٹ پر اب بھی ملازمین کام کر رہے ہیں؟ جس پر نمائندہ ملازمین محمد عمر نے عدالت کو بتایا کہ تھرکول پاور پروجیکٹ سائٹ پر مزدور اب بھی کام کر رہے ہیں،سپریم کورٹ کے ازخود نوٹس کے فیصلے کو تین سال گزر چکے ہیں،تھرکول پاور پروجیکٹ کے مزدوروں کو کام کی اجرت نہیں مل رہی۔جسٹس عمر عطا بندیال  نے اس موقع پر کہا کہ ہمارے ایک ساتھی نے یہ کیس سننے سے معذرت کر لی ہے، معاملہ چیف  جسٹس کو بھجوا رہے ہیں۔سپریم کورٹ نے2018 میں تھرکول پاور پروجیکٹ پر ازخود نوٹس لیا تھا۔سپریم کورٹ نے پروجیکٹ پر صرف ہونے والے پیسے کی انکوائری کے لیے معاملہ نیب کو بھیجوایا تھا،تھرکول پاور پروجیکٹ کے ملازمین نے تھرکول پاور پروجیکٹ کے سائنسدان ڈاکٹر ثمر مبارک کے خلاف توہین عدالت درخواست دائر کی تھی۔۔

کیس معذرت

مزید :

صفحہ آخر -