ڈالر کی قیمت کنٹرول کرنے کیلئے اقدامات ناگزیر: پیاف

ڈالر کی قیمت کنٹرول کرنے کیلئے اقدامات ناگزیر: پیاف

  

 لاہور(سٹی رپورٹر)پاکستان انڈسٹریل اینڈ ٹریڈرز ایسوسی ایشنز فرنٹ (پیاف) کے چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر،سینئر وائس چیئر مین ناصر حمید خان، وائس چیئر مین پیاف جاوید اقبال صدیقی اور دیگر اہم عہدیداروں حاجی محمد حنیف، طاہر منظور چوہدری، محمد علی میاں،، نعیم حنیف،مسعود نظامی، ذیشان سہیل ملک، حسن رضا، محمد ابوبکر نے روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قدر میں مسلسل اضافے اورحالیہ دنوں میں ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح پہنچنے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ روپے کیزوال سے اقتصادی محاذ پر حکومت کی معیشت بہتری کی کوشیشیں ضائع ہو سکتی ہیں جبکہ قرضوں میں اربوں روپے کا ضافہ ہو گیا ہے، سرمایہ کاری میں کمی، برآمدات کی غیر تسلی بخش صورتحال اور دیگر وجوہات کی وجہ سے پاکستان میں ڈالر کی آمد کی رفتارضرورت سے زیادہ سست ہے اور صرف ترسیلات سے روپے کی بے قدری کو کنٹرول نہیں کیا جا سکتا۔ درآمدات اور برآمدات میں بڑھتے ہوئے فرق کی وجہ سے روپے کی قیمت گرواٹ کا شکار ہے جسے کنٹرول کرنے کی اشد ضرورت ہے بصورت دیگر اسکے ملکی معیشت پر تباہ کن اثرات ہونگے۔ملکی معیشت دباؤ کا شکار ہے، ہر چیز مہنگی ہو رہی ہے اور ملک میں ہوشربا مہنگائی جنم لے رہی ہے۔ ایک طرف ترسیلات بڑھ رہی ہیں مگر دوسری طرف انکا بڑا حصہ غیر ضروری درآمدات کی نذر ہو رہا ہے، اس کا نوٹس لیا جائے۔ حکومت ڈالر کی بے لگام پرواز کو لگام دے کیونکہ ڈالر کی قیمت مسلسل بڑھنے سے خام مال مہنگا اور صنعتکار پریشانی کا شکار ہیں۔ عوام کی قوت خرید کم ہو رہی ہے اور کاروباری سرگرمیاں بھی متاثر ہورہی ہیں اور پاکستان عالمی مارکیٹ سے تیزی سے باہر ہورہا ہے۔ پاکستان کا تجارتی خسارہ بڑھ کر31.5 ارب ڈالر تک پہنچ گیا ہے۔چیئرمین پیاف میاں نعمان کبیر نے سیئنر وائس چیئرمین ناصر حمید خان اور وائس چیئرمین پیاف جاوید اقبال صدیقی نے کہا کہ اگر یہی صوتحال رہی اور ڈالر کی قیمتیں اسی طرح مزید بڑھتی رہیں تو مہنگائی میں اضافہ ہو جائے گا۔پچھلے چند ایام میں اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں اضافہ کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے چیئرمین پیاف نعمان کبیرنے کہا کہ روپے کی قدر میں کمی کمزور معیشت کی عکاس ہے اس سے ملکی معیشت کے لئے مزید مشکلات پیدا ہونگی کیونکہ روپے کی بے قدری کے باعث درآمدی خام مال کی قیمت بڑھ چکی ہے۔

، جس کی وجہ سے ملک کے اندر تیارہونے والے مصنوعات کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہو رہا ہے اور ملک میں مہنگائی کی شرح میں بھی نمایاں اضافہ ہوگا۔ چیئرمین پیاف نے کہا کہ سٹیٹ بنک اور فاریکس کمپنیاں بھی اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کریں۔ اور ڈالر کی قدر میں اضافہ روکنے کے لیے سخت ترین اقدامات کریں ایسے اقدامات کیے جائیں جن کے باعث ادائیگیوں میں تواز ن قائم ہو اور تجارتی خسارہ میں کمی ہو۔انہوں نے کہا کہ ڈالر کی قیمت میں آئے روز اضافہ ملکی معیشت کیلئے خطرہ کی گھنٹی ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ حکومت ڈالر کی قیمتوں کو کنٹرول کرنے کیلئے سخت ترین اقدامات کرے۔

مزید :

کامرس -