کورونا لاک ڈاؤن کے دوران بیروزگار ہونے والے جوڑے نے انتہائی شرمناک کام شروع کردیا، سن کر ہی انسان شرم سے پانی پانی ہوجائے

کورونا لاک ڈاؤن کے دوران بیروزگار ہونے والے جوڑے نے انتہائی شرمناک کام شروع ...
کورونا لاک ڈاؤن کے دوران بیروزگار ہونے والے جوڑے نے انتہائی شرمناک کام شروع کردیا، سن کر ہی انسان شرم سے پانی پانی ہوجائے

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا وائرس کی وباءکے دوران فحش مواد کے عوض رقم کمانے کے مواقع دینے والے پلیٹ فارمز کی مقبولیت میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے،جن میں اونلی فینز اور دیگر ایسی ویب سائٹس شامل ہیں۔ جب لاک ڈاﺅن کے دوران لوگ بڑی تعداد میں بے روزگار ہو گئے تو انہوں نے کچھ رقم کمانے کے لیے انتہائی شرمناک کام بھی شروع کر دیئے جن میں سے ایک مردوخواتین کا اپنے جنسی تعلق کو لائیو سٹریم کرنا بھی ہے۔ ایلیس لیوین نامی میزبان نے چینل 4سیریز ’سیکس ایکچوئلی‘ کے لیے ایسے ہی ایک جوڑے کا انٹرویو کیا ہے جنہوں نے لاک ڈاﺅن کے دوران اپنے جنسی تعلق کو لائیو سٹریم کرنا اور اس شرمناک کام سے رقم کمانا شروع کیا۔

یہ جوڑا 21سالہ کائیلہ اور اس کا 27سالہ بوائے فرینڈ جیک ہیں۔ کائیلہ لاک ڈاﺅن سے قبل سینڈوچ شاپ ورکر کے طور پر کام کرتی تھی جبکہ جیک ڈیکوریٹر کی ملازمت کرتا تھا۔ دونوں نیوکاسل کے رہائشی ہیں۔ انہوں نے ایلیس کو گزشتہ دنوں اپنے گھر مدعو کیا اور اسے دکھایا کہ وہ کس طرح جنسی تعلق قائم کرتے اور اسے لائیو سٹریم کرتے ہیں۔ اس دوران ایلیس ان کے بیڈروم میں موجود رہی اور وہ باہم جنسی تعلق قائم کرکے اسے لائیو سٹریم کرتے رہے۔

 انہوں نے بتایا کہ وہ لائیو سٹریم کے ناظرین سے ایک منٹ کے عوض 1پاﺅنڈ وصول کرتے ہیں۔جو شخص جتنے پاﺅنڈ انہیں دیتا ہے، وہ اتنے ہی منٹ انہیں جنسی تعلق قائم کرتے ہوئے لائیو دیکھ سکتا ہے۔ کائیلہ اور جیک کا انٹرویو چینل فور کی اس سیریز کی پہلی قسط میں نشر کیا جائے گا۔ اس سیریز میں ایلیس مزید ایسے ہی جوڑوں کے انٹرویو کرے گی جو آئندہ اقساط میں نشر کیے جائیں گے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -