آئی اے ای اے جنرل کانفرنس، پاکستانی وفد کی نائیجریا، آذر بائیجان، بیلاروس کے وفود سے ملاقاتیں، باہمی تعاون بڑھانے پر اتفاق

آئی اے ای اے جنرل کانفرنس، پاکستانی وفد کی نائیجریا، آذر بائیجان، بیلاروس ...
آئی اے ای اے جنرل کانفرنس، پاکستانی وفد کی نائیجریا، آذر بائیجان، بیلاروس کے وفود سے ملاقاتیں، باہمی تعاون بڑھانے پر اتفاق

  

ویانا (اکرم باجوہ) انٹرنیشنل اٹامک انرجی  ایجنسی (آئی اے ای اے) کی 65 ویں جنرل کانفرنس کے موقع پر پاکستان کے وفد نے نائیجیریا، آذر بائیجان اور بیلا روس کے وفود سے ملاقاتیں کی ہیں۔

جنرل کانفرنس کے موقع پر پاکستانی وفد نے اٹامک انرجی کمیشن کے سربراہ محمد نعیم کی قیادت میں تینوں ملکوں کے وفود سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کیں۔ ویانا میں بین الاقوامی تنظیموں میں پاکستان کے مستقل نمائندے اور سفیر آفتاب احمد کھوکھر بھی ان کے ہمراہ تھے۔

نائیجیریا کے وفد سے ملاقات میں دونوں فریقوں نے صحت اور زراعت کے شعبے میں جوہری ٹیکنالوجی کے پرامن استعمال سے متعلق دیگر شعبوں کو تلاش کرنے پر اتفاق کیا۔

اس کے علاوہ پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان آئی اے ای اے کے زیراہتمام تعاون جاری ہے جس کے تحت کپاس کی پاکستانی اقسام جو کہ ایٹمی تکنیکوں کے ذریعے بیماریوں اور موسم کے خلاف مزاحم ہیں آذربائیجان میں کاشت کی جا رہی ہیں تاکہ کپاس کی پیداوار بڑھائی جا سکے۔ جاری تعاون پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے دونوں فریقوں نے ایٹمی ادویات اور کینسر کے علاج پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے اسے دیگر شعبوں خصوصاً شعبہ صحت میں بڑھانے کے مواقع پر تبادلہ خیال کیا۔ ملاقات میں اس بات پر بھی اتفاق کیا گیا کہ دونوں ممالک ویانا میں اپنے مستقل مشنوں کے ساتھ ساتھ اسلام آباد اور باکو میں اپنے سفارت خانوں کے ذریعے اپنی مصروفیات جاری رکھیں گے۔

پاکستانی وفد نے بیلاروس کے وفد سے بھی ملاقات کی۔ اس موقع پر بیلاروس کے وزیر توانائی نے چیئرمین پاکستان اٹامک انرجی کمیشن کو بیلاروس کے دورے کی دعوت دی۔ سفیر آفتاب احمد کھوکھر نے پاکستان کی نیوکلیئر سپلائرز گروپ (این ایس جی) کی رکنیت کے لیے بیلاروس کی حمایت کو سراہا۔

مزید :

قومی -بین الاقوامی -