جنوبی پنجاب، سیلاب متاثرہ علاقوں میں وبائی امراض کا حملہ، ادویات غائب 

جنوبی پنجاب، سیلاب متاثرہ علاقوں میں وبائی امراض کا حملہ، ادویات غائب 

  

 ڈیرہ غازیخان، راجن پور،کوٹ ادو(سٹی رپورٹر، ڈسٹرکٹ رپورٹر،تحصیل رپورٹر)موسمی تبدیلی اور جنوبی پنجاب سمیت سندھ میں سیلابی صورتحال کے باعث ملیریا، ٹائیفائڈ اور ڈینگی بخار سمیت وبائی امراض پھوٹ پڑے ہیں جنوبی پنجاب کے سیلاب زدہ علاقوں میں ملیریا، ٹائیفائڈ اور ڈینگی بخار کے کیسز میں تشویش حد تک اضافہ ھو رھا ھے جبکہ دیگر مختلف وبائی امراض بھی پھیل رہے ھیں  جس کے باعث بخار(بقیہ نمبر31صفحہ6پر)

 اور درد کی ادویات کی مانگ میں کئی گنا اضافہ ہوچکا ہے، دوسری طرف ادویات ساز کمپنیوں نے خام مال کی امپورٹ نہ ھونے کے باعث  بروفین شربت کی پیداوار بند کر دی ھے جبکہ بخار اور درد کی دوا پینا ڈول کی پروڈکشن پہلے ہی بند ھے اب بروفین شربت کی پیداوار بند بھی ھو گء ھے جس کے باعث  مارکیٹ میں ملیریا،ٹائیفائڈ،ڈینگی بخار اور درد کی ادویات نایاب ہوچکی ہیں تاہم انتہائی باوثوق ذرائع کیمطابق بعض فارماسوٹیکل کمپینیز کی جانب سے یہ ادویات محدود پیمانے پر تیار کرکے مارکیٹ میں مخصوص  ھول سیلر کو فراہم کی جارہی ھیں جو خفیہ طور پر بلیک میں فروخت کر رہے ہیں بروفین شربت کی ریٹیل پرائز 80روپے ھے لیکن مارکیٹ میں بروفین شربت 100روپے سے 150 روپے تک فروخت ہورہا ہے،بروفین مارکیٹ میں غائب ہونے سے مریضوں کو شدید پریشانی کا سامنا ہے،شہریوں نے ادویات ساز کمپنیوں کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے وزیر اعظم میاں شہباز شریف سمیت وزیراعلی پنجاب،سیکرٹری ہیلتھ ودیگر اعلی حکام سے نوٹس لینے کامطالبہ کیا ہے

مزید :

ملتان صفحہ آخر -