ملتان:بداخلاقی واقعات میں اضافہ،صورتحال سنگین

ملتان:بداخلاقی واقعات میں اضافہ،صورتحال سنگین

  

ملتان(خصوصی رپورٹر)بداخلاقی اور بدفعلی کے کیسز کم نا ہوسکے۔ بچوں و خواتین سے  بداخلاقی کے واقعات کو نا روکا (بقیہ نمبر7صفحہ6پر)

جا سکا ذرائع کے مطابق ہر ماہ مختلف تھانوں میں خواتین و بچوں کے ساتھ  بداخلاقی کے 10 سے 15 کیسز کا اندراج کیا جاتا ہے جبکہ عدالتوں میں اسوقت خواتین اور کم عمر بچوں کے ساتھ  بداخلاقی، بدفعلی کے 185 مقدمات زیر التوا ہیں۔ ڈیٹا کے مطابق 7 ماہ میں 18 کیسز میں ملزمان کو سزائے موت اور عمر قید کی سزائیں سنائی گئی ہیں رواں سال ناقص تفتیش اور گواہوں کے منحرف ہونے پر  بداخلاقی و بدفعلی کے 202 مقدمات میں ملزمان کو بری کیا گیا ہے ماہ جنوری میں ایک کیس میں ملزموں کو عمرقید اور 34 کیسوں میں ملزموں کو بری کیا گیا، فروری میں 4 کیسز میں عمرقید،ایک کیس میں 7سال سے زائد سزا جبکہ 24 کیسوں میں ملزموں کو بری کیا گیا اسی طرح جولائی میں 2 مقدمات میں 7 سال سے زائد سزائیں دی گئیں جبکہ 17 کیسز میں ناکافی ثبوتوں اور گواہوں کے منحرف ہونے کی وجہ سے ملزمان بری ہوئے ہیں۔وکلا کا کہنا ہے کہ پاکستان میں خواتین و لڑکیوں سے جنسی تشدد ایک سنجیدہ معاملہ ہے حکومت کو چاہئے کہ وہ خواتین کو جنسی تشدد سے محفوظ بنانے کے لیے ٹھوس نوعیت کے اقدامات کرے،  بداخلاقی کیسز میں ناقص تفتیش کرنے والے پولیس اہلکاروں کے خلاف بھی سخت کاروائی کی جائے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -