پنجاب بھرکے سکولوں کو سینٹرز آف ایکسیلنس ہونا چاہیے، مراد راس

پنجاب بھرکے سکولوں کو سینٹرز آف ایکسیلنس ہونا چاہیے، مراد راس

  

فیصل آباد(سپیشل رپورٹر)صوبائی وزیر سکول ایجوکیشن پنجاب مراد راس نے پنجاب دانش سکولز اینڈ سنٹرز آف ایکسیلینس اتھارٹی کے زیر انتظام قائم ہونے والے سنٹر آف ایکسیلینس (بوائز) تاندلیانوالہ کا افتتاح کر دیا۔ اس موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ دانش سکولز اینڈ سینٹرز آف ایکسیلنس اتھارٹی کی پوری ٹیم نے زبردست کام کیا ہے۔مراد راس نے کہا کہ سینٹر آف ایکسیلنس تاندلیانوالہ میں طلبہ کو ناقابلِ فراموش تعلیمی سہولیات فراہم کی جائیں گی۔ اس سکول کے قیام پر تقریبا 25 کروڑ روپے کی لاگت آئی ہے اور اس میں قریب 3 ہزار طلبہ مفت تعلیم حاصل کر سکیں گے۔ انہوں نے بتایا کہ سکول کی 3 منزلہ عمارت میں 47 کلاس رومز تعمیر کئے گئے ہیں اور یہاں طلبا کے لیے سائنس لیب، آئی ٹی لیب، لائبریری، سٹاف روم، گراؤنڈ و دیگر سہولیات موجود ہیں۔ صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ سنٹر آف ایکسیلینس (بوائز) تاندلیانوالہ پنجاب میں دانش سکولز اتھارٹی کے زیر انتظام چلنے والا بارہواں سکول ہے اور اس سے قبل11 سنٹرز آف ایکسیلینس سکولوں میں 22 ہزار سے زائد بچے بہترین سہولیات کے ساتھ تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ مراد راس نے کہا کہ ہم نے گزشتہ حکومت کے منصوبوں کو بند کرنے کی بجائے اُنہیں مزید کار آمد و بہتر بنایا ہے۔ وزیر سکول ایجوکیشن کا تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہنا تھا کہ اصُولی طور پر پنجاب کے تمام سکولوں کو سینٹرز آف ایکسیلنس کی طرز پر تیار ہونا چاہیے۔انہوں نے کہا کہ اس وقت ضلع لاہور، ٹوبہ ٹیک سنگھ اور چکوال میں بھی سینٹرز آف ایکسیلنس سکول زیرِ تعمیر ہیں جو بہت جلد مکمل کر لئے جائیں گے۔سنٹر آف ایکسیلنس تاندلیانوالہ کی افتتاحی تقریب کے موقع پر وائس چئیرپرسن دانش سمیرا احمد، مینیجنگ ڈائریکٹر دانش سکولز احمر ملک، ایم پی اے فردوس رائے،اسسٹنٹ کمشنر نعمان علی، سی ای او ایجوکیشن علی احمد سیان، اساتذہ و دیگر موجود تھے۔ صوبائی وزیر تعلیم مراد راس نے شجرکاری کے فروغ کے لئے سینٹر آف ایکسیلنس تاندلیانوالہ میں پودا بھی لگایا۔

سینٹر آف ایکسیلنس

مزید :

پشاورصفحہ آخر -