کراچی ‘ این اے 246کے ضمنی الیکشن ‘ تحریک انصاف اور ایم کیو ایم کے درمیان آج کانٹے دار مقابلہ ہو گا

کراچی ‘ این اے 246کے ضمنی الیکشن ‘ تحریک انصاف اور ایم کیو ایم کے درمیان آج ...

 کراچی (خصو صی رپورٹ) تحریک انصا ف اور ایم کیو ایم کے درمیا ن آ ج کا نٹے دار مقابلہ ہو گا ، تصا دم کا خطرہ ، کسی بھی ممکنہ جھگڑے سے نمٹنے کیلئے ر ینجرز اور پولیس کی نگرانی میں این اے دو چھیالیس میں ووٹنگ ہو گی۔ رینجرز کی نگرانی میں بیلٹ باکس پولنگ اسٹیشنز پہنچا دیئے گئے ۔ 55 سکولوں میں 213 پولنگ اسٹیشن بنائے گئے ہیں جہاں رینجرز اور پولیس نے سیکورٹی انتظامات مکمل کر لیے ہیں۔ پولنگ کے دوران چار ہزار رینجرز اہلکار ڈیوٹی دیں گے۔ پولنگ اسٹیشن کے اندر اور باہر ایک ایک رینجر اہلکار تعینات ہو گا۔ رینجرز کو مجسٹریٹ کے اختیارات بھی دیئے گئے ہیں۔ ڈی آئی جی ویسٹ فیروز شاہ کا کہنا ہے سات ہزار تین سو تہتر اہلکار فرائض انجام دیں گے۔ 2ایس ایس پی، 15 ایس پی، 9 ڈی ایس پی اور 18 ایس ایچ او حلقے میں موجود رہیں گے۔ ہر پولنگ اسٹیشن کے اندر 16 اور باہر 12 اہلکار تعینات ہوں گے۔ نگرانی کے لئے ڈی سی سنٹرل آفس میں مانیٹرنگ روم بنا دیا گیا۔ کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کے لئے پولیس تین منٹ میں پہنچ جائے گی ۔ جبکہ تین دن کے لئے شہر بھر میں موٹرسائیکل کی ڈبل سواری پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ ضمنی الیکشن میں ایم کیوایم، تحریک انصاف اور جماعت اسلامی کے امیدواروں میں قدر مشترک یہ ہے، کہ تینوں کا تعلق کسی اور حلقے سے ہے، اس طرح انتخاب سے پہلے ہی تینوں کا ایک ایک ووٹ کم ہوگیا، تین اہم جماعتوں کے امیدوار ووٹ کاسٹ نہیں کرسکیں گے۔ایم کیو ایم کے کنور نوید کا ووٹ این اے 219 حیدرآباد کے پولنگ اسٹیشن نمبر 250 میں ہے۔ پی ٹی آئی کے امیدوارعمران اسماعیل کا ووٹ این اے 251 ڈیفنس کراچی کے پولنگ اسٹیشن نمبر 52 میں ہے، اور جماعت اسلامی کے راشد نسیم این اے 245 نارتھ ناظم آباد کے ووٹر ہیں، اور ان کا ووٹ پولنگ اسٹیشن نمبر264 میں ہے، دوسری طرف این اے 246 میں انتخابی سامان کی پولنگ اسٹیشنز پر ترسیل کا عمل جاری ہے،پولنگ عمل کے لیے تین لاکھ 57 ہزار 781 بیلٹ پیپرز کی پولنگ اسٹیشنز کے حساب سے الگ الگ تھیلوں میں پیکنگ کی گئی ہے

مزید : صفحہ اول