ضلع نیلم( بانڈی) چار سال گزرنے کے باوجود مکانوں کے معاوضوں کی ادائیگی نہ ہو سکی

ضلع نیلم( بانڈی) چار سال گزرنے کے باوجود مکانوں کے معاوضوں کی ادائیگی نہ ہو ...
ضلع نیلم( بانڈی) چار سال گزرنے کے باوجود مکانوں کے معاوضوں کی ادائیگی نہ ہو سکی

  

نیلم جورا(آئی این پی)ضلع نیلم کے علاقہ بانڈی میں عرصہ چار سال گزرنے کے بعد بھی لوگوں کو مکانوں کے معاوضوں کی ادائیگی نہ ہو سکی لوگ دفتروں کے چکر کاٹ کاٹ کر تنگ آچکے ہیں کلرکوں کا کہنا ہے ضلع میں فنڈ ز موجود نہیں ہیں اور لینڈ سلائیڈنگ سے مکانات کی تباہی کے باﺅجود لوگ دوبارہ دفتروں کا رخ نہ کر سکے لوگ اپنے مکانات چھوڑ کر دوسروں کے گھروں میں کسمپرسی کی زندگی گزارنے پہ مجبور ہیں انتظامیہ کی جانب سے ایک ٹینٹ بھی دستیاب نہ ہو سکا جبکہ پولیس نے بر وقت مکانات کا سروئے کیا اور لوگوں کو مثل مرتب کر کے دی تاکہ معاوضہ حاصل کر سکیں جناب مجسٹریٹ درجہ اول سلطان صاحب نے بار بار مکانوں کا جائزہ لیا اور معاوضہ کی یقین دہانی کرائی ضلع کے سابق ڈپٹی کمشنر عبدالقیوم نے خود بانڈی کے متاثرین کے گھروں کا جائزہ لیا مکانوں میں پڑنے والی دراڑیں دیکھیں لوگوں کے مکانوں کو خالی کروایا اور فوری معاوضہ کی یقین دہانی کروائی لیکن متاثرین کو معاوضہ کی ادائیگی تا حال نہ ہو سکی کلرک آج تک مثلوں پہ سانپ بن کر بیٹھے ہوئے ہیں بے روزگاری اور آفات سماوی جیسے مسائل درپیش ہونے پر لوگ بمشکل بچوں کا پیٹ پالتے ہیں لوگوں کے پاس اتنے وسائل نہیں کہ وہ بار بار دفتروں کے چکر کاٹیں۔

مزید : آزاد کشمیر