ہائی کورٹ : 2بھائیوں کے قاتل کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل ،بریت کی اپیل خارج

ہائی کورٹ : 2بھائیوں کے قاتل کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل ،بریت کی اپیل خارج
ہائی کورٹ : 2بھائیوں کے قاتل کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل ،بریت کی اپیل خارج

  

لاہور (نامہ نگار خصوصی) لاہورہائیکورٹ نے دوبھائیوں کے قتل کے مقدمہ میں سزایافتہ 2قید ی بھائیوں کوبری کرنے کی اپیل مسترد کردی تاہم ایک مجرم مظہر کی سزائے موت کو عمر قید کی سزا میں تبدیل کردیا۔ضلع چنیوٹ کے شہادت علی اورفلک شیر کے قتل کے مقدمہ میں متعلقہ ٹرائل کورٹ نے مظہر کو سزائے موت جبکہ اس کے بھائی ظفر کی 10سال قید با مشقت کی سزائیں سنائی تھیں ۔اپیل کنندگان کی طرف سے موقف اختیارکیا گیا تھاکہ تھانہ بڈھانہ ضلع چنیوٹ میں 11مئی 2004ءکو شہادت علی اورفلک کے قتل کا مقدمہ مظہر اورظفر دوبھائیوں کے خلاف درج کیاگیا۔ وکیل صفائی کا کہناتھا کہ مقتول پارٹی کے ساتھ جائیداد کا جھگڑا ہونے کی وجہ سے انہیں بدنیتی سے قتل کے مقدمہ میں ملوث کیاگیا وہ بے گناہ ہیں۔ ناکافی شواہد کے باوجود ٹرائل کورٹ نےانہیں سزا کا حکم سنایا۔ ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل پنجاب خرم خان نے بریت اپیل کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ملزمان پولیس تفتیش میں قصوروار ہیں۔ فائرنگ کے نتیجے میں زخمی ہونے والے افراد نے بھی ٹرائل کورٹ میں ملزمان کے خلاف بیان ریکارڈ کرایا۔ ملزمان سے برآمد ہونے والا اسلحہ کی لیبارٹری رپورٹ کے مطابق بھی ملزم قصوروار ہیں۔ عدالت نے فریقین کے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد مظہر کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کردی جبکہ ظفر کی 10سال کی قید کی سزا برقراررکھتے ہوئے بریت کے لئے دائراپیل مسترد کردی۔

مزید : لاہور